Friday , August 18 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ت12% تحفظات  کا مسئلہ : حکومت کی نیت میں کھوٹ پر احتجاج میں پھر شدت

ت12% تحفظات  کا مسئلہ : حکومت کی نیت میں کھوٹ پر احتجاج میں پھر شدت

نقائص سے پاک حکمت عملی اور جامع منصوبہ بندی کا مطالبہ ، سنگاریڈی میں مسلم ریزرویشن فرنٹ کی بھوک ہڑتال ، مختلف قائدین کا خطاب

سنگاریڈی۔ 12 جنوری (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مسلم ریزرویشن فرنٹ ضلع سنگاریڈی کی جانب سے آج جدید کلکٹریٹ کے روبرو مسلم طبقہ کو 12% تحفظات کی فوری فراہمی کا مطالبہ کرتے ہوئے بھوک ہڑتال و احتجاجی دھرنا منظم کیا گیا۔ محمد خواجہ چیرمین، خواجہ ارشد الدین کنوینر، محمد سمیع جنرل سیکریٹری، رحمن شریف سیکریٹری، معراج خاں ہاشمی جوائنٹ سیکریٹری، عرفات محی الدین پبلیسٹی سیکریٹری، محمد عزیز جوائنٹ سیکریٹری، محمد احمد رکن عاملہ اور محمد خلیل الرحمن اور دیگر اراکین کمیٹی نے کہا کہ وزیراعلیٰ کے چندر شیکھر راؤ انتخابی منشور میں 12%تحفظات مسلم طبقہ کو دینے کا وعدہ کرتے ہوئے تلنگانہ کے تمام اسمبلی حلقوں میں تشہیر کئے اور علیحدہ ریاست تلنگانہ کی تشکیل کے بعد ٹی آر ایس پارٹی برسراقتدار آنے کے بعد وزیراعلیٰ کے چندر شیکھر راؤ کو ان کا وعدہ یا دلاتے ہوئے 12% مسلم تحفظات کی فراہمی کیلئے کئی مرتبہ علاقہ تلنگانہ سے مسلم قائدین و تنظیموں کی جانب سے نمائندگی کی گئی۔ ٹی آر ایس اقتدار میں آکر ڈھائی سال سے زائد عرصہ گذر چکا ہے لیکن ابھی تک تحفظات کا اعلان نہیں کیا گیا۔ انہوں نے ریاستی حکومت سے فی الفور 12% مسلم تحفظات کی فراہمی کا مطالبہ کیا اور اسمبلی سیشن میں تحفظات بل پیش کرتے ہوئے منظور کروانے کا مطالبہ کیا۔ تملناڈو کے طرز پر مسلمانوں کو تحفظات دیئے جائیں۔ سدھیر کمیٹی و دیگر کمیشنوں کی سفارشات حکومت کو وصول ہوچکی ہیں لہذا حکومت کو چاہئے کہ فوری مسلمانوں کو بغیر کسی ٹال مٹول کے 12% تحفظات فراہم کئے جائیں۔ محمد خواجہ چیرمین اور محمد سمیع جنرل سیکریٹری نے کہا کہ 12%تحفظات کا مطالبہ کرتے ہوئے ٹی آر ایس حکومت کے وزراء کو بھی یادداشتیں پیش کی جاچکی ہیں۔ اس کے علاوہ کانگریس، تلگو دیشم اور سی پی ایم اور دیگر اپوزیشن قائدین کو بھی مسلم تحفظات سے متعلق یادداشتیں پیش کی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلم ریزرویشن فرنٹ سنگاریڈی کی جانب سے مستقبل میں مزید احتجاجی پروگرامس منعقد کئے جائیں گے۔ ایم اے خالق حسینی جرنلسٹ نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت اپنے انتخابی وعدے کے مطابق مسلمانوں کو 12% تحفظات کی فراہمی کا اعلان کرے تاکہ مسلم طبقہ کی پسماندگی دور ہوسکے اور شعبہ تعلیم اور ملازمتوں میں نوجوانوں کو فائدہ ہوسکے۔ ریاست تلنگانہ کے اقلیتی بجٹ کا خرچ اس سال انتہائی مایوس کن رہا۔ 1200 کروڑ اقلیتی بجٹ مختص ہونے کے باوجود ریاستی مائناریٹی ویلفیر کے عہدیدار مسلم طبقہ کی ترقیاتی اسکیموں، فیس ری ایمبرسمنٹ، شادی مبارک اسکیم، خود روزگار اسکیم پر خرچ کرنے میں ناکام ہیں۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر اس خصوص میں جائزہ لیتے ہوئے اقلیتی بجٹ مکمل طور پر اقلیتوں کی فلاح و بہبود پر ہی خرچ کرے۔ تسکین محی الدین آصف سابق چیرمین وقف بورڈ ضلع میدک نے کہا کہ مسلم طبقہ معاشی طور پر انتہائی پسماندہ ہے۔ انہیں فوری تعلیم و روزگار میں 12% تحفظات کی فراہمی ضروری ہے۔ بی ملیش رکن بلدیہ سی پی ایم پارٹی نے کہا کہ 12% تحفظات دینے ٹی آر ایس حکومت نے وعدہ کیا تھا، جس کو پورا کرنا وزیراعلیٰ کے چندر شیکھر راؤ کی ذمہ داری ہے۔ آر سرینواس گوڑ سابق چیرمین ضلع پریشد نے کہا کہ کے سی آر نے مسلمانوں کو تعلیمی و معاشی طور پر کمزور بتاتے ہوئے انہیں 12% تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ وزیراعلیٰ کو چاہئے کہ وہ فوری طور پر اپنے انتخابی وعدہ کی تکمیل کریں۔ اس موقع پر عرفات اسوسی ایشن اندرا کالونی سنگاریڈی اور سداسیوپیٹ کی مسلم تنظیموں کی جانب سے بھوک ہڑتالی کیمپ پہنچ کر ان سے اظہار یگانگت کیا گیا۔ مولانا سید ذاکر نے کہا کہ مسلم طبقہ معاشی طور پر پسماندہ ہونے کی بات کو تمام حکومتیں مانتی ہیں تو 12% تحفظات کی فراہمی میں کیوں دیر کی جارہی ہے۔ مسلمانوں کو 12% تحفظات کی فراہمی کی یقین دہانی کے باوجود حکومت غیرجمہوری عمل پر ہے۔ ٹی آر ایس حکومت 12%تحفظات کی فراہمی میں ٹال مٹول پالیسی اپنائی ہوئی ہے جوکہ انتہائی نامناسب بات ہے۔ فوری طور پر مسلم طبقہ کی تعلیمی و معاشی پسماندگی دور کرنے 12% تحفظات کی فراہمی کا اعلان کرے۔ سید عبدالرافع التمش نے کہا کہ جناب ایم اے قادر فیصل صدر اُردو جرنلسٹ فورم کی قیادت میں بھی ضلع سنگاریڈی میں کئی ایک مرتبہ 12% تحفظات کی فراہمی کیلئے حکومت سے نمائندگی کی گئی۔ صوفی ماجد پاشاہ قادری شطاری نے بھی مسلمانوں کو 12% تحفظات کی عاجلانہ فراہمی کا مطالبہ کیا۔ محمد عبدالغنی الامین ایجوکیشنل سوسائٹی سداسیوپیٹ، سید مقصود احمد صدر جوبلی مسجد سداسیو پیٹ، فردوس احمد نے بھی خطاب کیا۔ جناب ایم اے حکیم ایڈوکیٹ سینئر قائد ٹی آر ایس پارٹی، جناب ایم جی انور صدر ضلع ایم پی جے، مفتی محمد اسلم سلطان قاسمی ناظمہ مدرسہ عربیہ نعمانیہ سنگاریڈی، محمد اطہر محی الدین شاہد ناظم شعبہ نشر و اشاعت جماعت اسلامی سنگاریڈی، حافظ شیخ شفیع جنرل سیکریٹری، جمعیتہ العلماء سنگاریڈی، محمد عظمت شریف اور محمد عبدالرحیم کے علاوہ دیگر قائدین نے بھوک ہڑتالی کیمپ پہنچ کر مسلم ریزرویشن فرنٹ ضلع سنگاریڈی کے قائدین سے اظہار یگانگت کیا اور مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ٹی آر ایس پارٹی نے اپنے انتخابی منشور میں مسلمانان تلنگانہ کو 12% تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کیا اور صبر آزما ڈھائی سال کا طویل عرصہ گذر جانے کے باوجود بھی 12% مسلم تحفظات ندارد ہیں۔ سرکاری ملازمتوں میں تقررات ہورہے ہیں۔ اس موقع پر 12% مسلم تحفظات فراہم کئے جائیں تو مسلم طبقہ کو فائدہ ہوگا، ورنہ محض کاغذی جمع خرچ کے مترادف ہوگا۔ وزیراعلیٰ چندر شیکھر راؤ اپنے وعدہ کے مطابق مسلمانان تلنگانہ کو عدالتی کشاکش سے پاک 12% تحفظات فراہم کریں اور تحفظات کی فراہمی کیلئے جامع منصوبہ بندی کے ساتھ اقدامات کریں۔ ان قائدین نے 12% مسلم تحفظات کیلئے مسلم ریزرویشن فرنٹ ضلع سنگاریڈی کی جدوجہد کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ تلنگانہ بھر میں اس طرح کی کوشش کی جانی چاہئے۔ شام میں بھوک ہڑتالی کیمپ کا اختتام عمل میں آیا۔

TOPPOPULARRECENT