Sunday , September 24 2017
Home / شہر کی خبریں / ت2020تک ڈیجیٹل انقلاب‘ مشینیں انسانوں سے بات کرنے لگیںگی

ت2020تک ڈیجیٹل انقلاب‘ مشینیں انسانوں سے بات کرنے لگیںگی

مفخم جاہ کالج آف انجینئرنگ اینڈ ٹکنالوجی کے اورینٹیشن پروگرام سے چیرمین NASSCOM کا خطاب
حیدرآباد۔ 4؍اگست۔ ( سیاست نیوز ) اگلے 8برس میں یعنی 2020ء تک 20بلین اشیاء یا مختلف آلات ایک دوسرے سے مربوط ہوجائیںگے۔ مشینیں مشینوں سے اور انسانوں سے بات کرنے لگیںگی۔ یہ ڈیجیٹل ٹکنالوجی کے ارتقاء کی ایک ایسی منزل ہوگی جس کا تصور ہی افسانوی لگتا ہے۔ یہ انکشاف چیرمین NASSCOM اور فائونڈر ایگزیکٹیو چیرمین Cyient Limited ڈاکٹر بی وی آر موہن ریڈی نے آج مفخم جاہ کالج آف انجینئرنگ اینڈ ٹکنالوجی کے سال اول کے طلبہ سے خطاب کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا یہ ڈیجیٹل انقلاب کا دور ہے اور طلبہ کو انٹرنیٹ اور کمیونکیشن ٹکنالوجیز سے استفادہ کرتے ہوئے اس انقلاب کا حصہ بننا چاہئے۔ آج کا دور ٹکنالوجی کے عروج کادور ہے۔ انہوں نے انجینئرنگ کے تاریخی پس منظر پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ 1325ء تک صرف ملٹری اور سیول انجینئرنگ کا ہی تصور تھا۔ گذشتہ 800 برس میں یہ بہت کچھ تبدیلیاں ہوچکی ہیں۔ ہر بار ٹکنالوجی ایک نئی جست لگاتی ہے جس سے انسانیت کو فائدہ ہوتا ہے۔ صحت، دولت اور خوشحالی میں اضافہ ہوتا ہے۔ طلباء جو مستقبل کے انجینئرس ہیں وہ بھی ٹیکنالوجی کی ترقی کے ساتھ جست لگارہے ہیں۔ اس طرح وہ خوش قسمت ہیں۔ انٹرنیٹ کمیونیکیشن ٹیکنالوجی کے اس دور میں ہر روز ایک نیا انقلاب رونما ہوتا ہے۔ اب جو رفتار ہے اس کی نظیر ماضی میں نہیں ملتی۔ ڈکٹر بی وی آر موہن ر یڈی نے اپنے کلیدی خطبہ  میں تین باتوں کیا اہمیت پر زور دیا۔ مسلسل سیکھنے کا عمل، نت نئی ایجادات میں حصہ لینا اور نئے خیالات اور تجاویز کے ساتھ تخلیقی صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنا۔ چیف ایگزیکٹیو  آفیسر تلنگانہ اکیڈیمی فار اسکل اینڈ نالج (ٹاسک) مسٹر سوجیو نارائن نے طلبہ کو تلقین کی کہ وہ تین باتوں پر دھیان دیں۔ ہر روز 86400 سکینڈس کے وقت کو اپنی دولت سمجھیں۔ تعلیم پر توجہ دیں۔ ہر ایک طالب علم کم از کم کسی ایک صلاحیت کو نکھارنے پر توجہ دیں۔ انہوں نے والدین سے خواہش کی کہ وہ طلبہ کی صلاحیتوں کو اُجاگر کرنے میں ان کی حوصلہ افزائی کریں۔ انہوں نے بتایا کہ Samsung اور SAP جیسے کمپنیوں میں مہارت پر مبنی 68 کورسس ہیں۔ انہوں نے طلبہ سے کہا کہ سوسائٹی کو وہ اپنی صلاحیتوں سے ترقی سے ہم کنار کریں۔ انہوں نے کہا کہ طلباء اپنے افراد کے ماحول کا خیال رکھیں۔ اخلاقی اقدار پر مبنی نظام کو برقرار رکھیں اور سنہرے تلنگانہ کے خواب کو پورا کرے۔ انہوں نے کار ڈرائیونگ کے دوران سیٹ بیلٹ اور بائیک رائڈنگ کے دوران ہیلمٹ کے اسعمال کا مشورہ دیا۔ مسٹر رام کرشنا لنگی ریڈی وائس پریسیڈنٹ کیاپ جیمینی انڈیا نے کہا کہ 10برس کے دوران 125 ملین افراد گریجویٹ بنیںگے۔ یہ ینگ انڈیا بننے کا بہترین موقع ہے۔ جبکہ آبادی کا 29فیصد 19سال سے کم عمر اور 50فیصد سے زائد طبقہ 24سال سے کم عمر ہوگا۔ قبل ازیں جناب ظفر جاوید سکریٹری سلطان العلوم ایجوکیشن سوسائٹی نے خیر مقدم کیا اور کہا کہ یہ وقت ہے کہ ہم ٹکنالوجی کے موجد اور ایکسپورٹر بن گئے ہیں۔ نوجوان انجینئرس اپنے ملک کے لئے متنوع ایجادات سے انقلاب رونما کریںگے۔ قبل ازیں وائس چیرمین سوسائٹی جناب محمد ولی اللہ، خازن ڈاکٹر میر اکبر علی خاں، کالج پرنسپل کے وی کرشنن اور عامرجاوید نے مہمانوں کو مومنٹوس پیش کئے۔ ڈاکٹر بشیر احمد ڈائرکٹر نے استقبال کیا۔ڈاکٹر ضیاء ندیم، جناب نثار احمد شہ نشین پر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT