Friday , September 22 2017
Home / ہندوستان / جادھو کی رہائی کیلئے مودی دباؤ ڈالیں: کانگریس

جادھو کی رہائی کیلئے مودی دباؤ ڈالیں: کانگریس

 
نئی دہلی۔ 11 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے آج وزیراعظم نریندر مودی سے اپیل کی کہ پاکستان پر سفارتی ڈالتے ہوئے کُلبھوشن جادھو کی رہائی حاصل کی جائے، جسے پاکستان کی ایک ملٹری کورٹ نے سزائے موت سنائی ہے۔ کانگریس کے ترجمان اعلیٰ رندیپ سرجے والا نے ٹوئٹر پر کہا کہ سزائے موت ہندوستان کیلئے دانستہ اشتعال انگیزی کے مترادف ہے۔ بی جے پی حکومت کو چاہئے کہ روایتی طریقوں سے کہیں آگے بڑھ کر سوچے۔ پی ایم کو جادھو کی رہائی حاصل کرنے کیلئے مداخلت کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کو بین الاقوامی سفارتی دباؤ پیدا کرتے ہوئے جادھو کو آزاد کرانا چاہئے، جن کو گزشتہ روز پاکستان کے شورش زدہ صوبہ بلوچستان اور کراچی شہر میں جاسوسی اور سبوتاج کی سرگرمیوں میں مبینہ رول کی پاداش میں سزائے موت سنا دی گئی ہے۔ پاکستان پر ہندوستان کو پیشگی اطلاع دیئے بغیر جادھو کا ٹرائیل خفیہ طریقہ سے منعقد کرنے پر شدید نشانہ بناتے ہوئے سرجے والا نے کہا کہ یہ تبدیلی پاکستان کی ’’کنگرو کورٹ‘‘ کے فیصلہ جیسی ہے۔ انہوں نے پاکستانی وزیراعظم کے مشیر برائے وزیر خارجہ سرتاج عزیز کے اپنے ملک کی سینیٹ میں گزشتہ ڈسمبر کو دیئے گئے بیان سے متعلق میڈیا کی رپورٹس کا حوالہ بھی دیا کہ جادھو کے خلاف ثبوت ناکافی ہیں۔ سرجے والا نے کہا کہ اس پس منظر میں کیا ہمارے وزیراعظم اپنے پاکستانی ہم منصب کو فون کرتے ہوئے جادھو کا مسئلہ اُٹھائیں گے جن کا تعلق سے خود سرتاج عزیز نے ناکافی ثبوت کا اعتراف کیا تھا۔

جادھو کو پھانسی کی سزا کیخلاف مسلمانوں کا مظاہرہ
لکھنؤ۔ 11 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی شہری کلبھوشن جادھو کو پھانسی کی سزا سنائے جانے کے خلاف آج یہاں بڑی تعداد میں لوگوں نے پاکستان کے خلاف مظاہرہ کیا اور نعرے بازی کی۔ اسلامک سینٹر آف انڈیا کے باہر ہزاروں کی تعداد میں مسلمانوں نے احتجاج کیا۔ مدرسے کے ہزاروں طلبا نے یکجہتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے سابق فوجی کی سزا معاف کرنے اور ان کی رہائی کو لے کر زبردست طریقے سے احتجاج درج کرایا۔مظاہرہ کرنے والے لوگ ‘پاکستان، کلبھوشن کو رہا کرو’ جیسے نعرے لکھے تختیاں پکڑے تھے اور پاکستان کی وحشیانہ کارروائی کے خلاف نعرے بازی کر رہے تھے ۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ پڑوسی ملک کی فوجی عدالت نے بے قصور ہندوستانی کے خلاف یکطرفہ کارروائی کی اور انہیں اپنی دلیل دینے کے لیے وکیل کا بھی انتظام نہیں کیا گیا۔ پاکستان کی یہ بزدلانہ حرکت ہے اور اس کی جتنی بھی مذمت کی جائے وہ کم ہے ۔

TOPPOPULARRECENT