Tuesday , May 23 2017
Home / Top Stories / جادھو کی سزائے موت پر آئی سی جے کا حکم التواء

جادھو کی سزائے موت پر آئی سی جے کا حکم التواء

پاکستان کے خلاف ہندوستان کی سفارتی کامیابی،سیاسی جماعتوں کا خیرمقدم ، جادھو کے ساتھیوں کا جشن

دی ہیگ / نئی دہلی ۔ /18 مئی (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے آج پاکستان پر ایک بڑی سفارتی کامیابی حاصل کی جبکہ انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس (آئی سی جے) نے سابق ہندوستانی بحریہ کے عہدیدار کلبھوشن جادھو کی سزائے موت کی تعمیل پر حکم التواء جاری کیا ہے ۔ اقوام متحدہ کے سب سے بڑے عدالتی ادارے نے پاکستان سے کہا ہے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائے کہ قطعی فیصلہ سنائے جانے تک جادھو کو سزائے موت نہ دی جائے ۔ پاکستان کی فوجی عدالت نے جادھو کو جاسوسی کے الزام میں سزائے موت سنائی ہے ۔ ہندوستان نے آج آئی سی جے کے فیصلہ پر راحت کی سانس لی اور تمام سیاسی قائدین نے اس فیصلہ کا خیرمقدم کیا ۔ جبکہ جادھو کے ساتھی خوشی سے جھوم اٹھے اور آتش بازی کا مظاہرہ کیا ۔ آئی سی جے میں ہندوستان کے اٹارنی ہریش سالوے کی وزیراعظم نریندر مودی ، وزیر خارجہ سشما سواراج اور دیگر قائدین نے ستائش کی جنہوں نے جادھو کا بھرپور دفاع کیا تھا ۔ آئی سی جے کی11 ججس پر مشتمل بنچ نے جیسے ہی متفقہ طور پر حکم التواء کا فیصلہ سنایا ، مودی نے سشما سواراج سے فون پر ربط قائم کرتے ہوئے ان کی اور سالوے کی تعریف کی ۔ سینئر کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد نے اس فیصلہ کا خیرمقدم کرتے ہوئے حکومت پر زور دیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائے کہ جادھو کے ساتھ انصاف اور ہندوستان واپسی ہوسکے ۔ وزیر دفاع ارون جیٹلی نے سلسلہ وار ٹوئٹس میں پاکستان کے عدالتی نظام کو تنقید کا نشانہ بنایا ۔ بی جے پی صدر امیت شاہ نے اس فیصلہ کا خیرمقدم کیا ۔ ممبئی میں جہاں جادھو پروان چڑھے ان کے ساتھیوں اور بہی خواہوں نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے آتش بازی کی ۔

آئی سی جے نے ہدایت دی کہ قطعی فیصلہ تک یہ حکم التواء نافذ رہے گا۔ مقدمہ کے بارے میں اپنے دائرہ کار کو منواتے ہوئے عدالت نے کہاکہ ویانا کنونشن کونسل تعلقات کے سلسلہ میں اس بات کا تقاضہ کرتا ہیکہ ہندوستان کو جادھو تک کونسلر رسائی یقینی بنائی جائے جس سے پاکستان 16 مرتبہ ہندوستان کو محروم کرچکا ہے۔ بین الاقوامی عدالت نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان دونوں ویانا کنونشن پر دستخط کرنے والے ممالک ہیں۔ ہندوستان نے 8 مئی کو سزائے موت سنائے جانے کے دوسرے ہی دن بین الاقوامی عدالت سے ربط پیدا کیا تھا۔ مرکزی وزیر ارون جیٹلی نے کہا کہ بین الاقوامی عدالت کا فیصلہ ہندوستان کے موقف کی توثیق ہے اور قانون کی حکمرانی کو فتح حاصل ہوئی ہے۔ مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے عدالت کے فیصلہ پر اظہاراطمینان کرتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت جادھو کو بچانے کیلئے کسی بھی حدتک جائے گی۔ وزیرخارجہ سشماسوراج عدالتی فیصلہ کو عظیم راحت رسانی قرار دیا۔ ہندوستان کی درخواست پر کہ ماورائے عدالت پاکستان کی جانب سے جادھو کو سزائے موت ایک ناقابل تلافی نقصان ہوگا۔ جادھو کا مقدمہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشیدگی کی تازہ وجہ بن گیا ہے۔

آئی سی جے کا فیصلہ قبول : پاکستان
لاہور ۔ /18 مئی (سیاست ڈاٹ کام)  پاکستان کے صوبہ پنجاب کے وزیر قانون رانا ثناء اللہ نے آج کہا ہے کہ اسلام آباد کلبھوشن جادھو کے بارے میں انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس کے فیصلے کو قبول کرے گا ۔ ان کا بیان دفتر خارجہ سے جاری کردہ اس موقف سے مختلف ہے جس میں کہا گیا تھا کہ پاکستان قومی سلامتی سے متعلق امور میں آئی سی جے کے دائرے کار کو قبول نہیں کرے گا ۔ ثناء اللہ نے پنجاب اسمبلی میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم آئی سی جے کا فیصلہ قبول کرتے ہیں ۔ اگرچہ یہ مقدمہ آئی سی جے کے دائرہ کار میں نہیں آتا اس کے باوجود پاکستان اسے قبول کرے گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کے پاس کلبھوشن جادھو کے جاسوسی میں ملوث ہونے کا ٹھوس ثبوت موجود ہے ۔ دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نے کہا تھا کہ ہندوستان نے جادھو کے مقدمہ کو آئی سی جے سے رجوع کرتے ہوئے اپنا حقیقی چہرہ مخفی رکھنے کی کوشش کررہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کا حقیقی چہرہ ساری دنیا کے سامنے بے نقاب ہوجائے گا ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT