Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / جاریہ سال اقلیتی بہبود کا بجٹ نصف سے بھی کم جاری کیا گیا

جاریہ سال اقلیتی بہبود کا بجٹ نصف سے بھی کم جاری کیا گیا

آئندہ سال تو اضافہ کا منصوبہ لیکن …..
جاریہ سال اقلیتی بہبود کا بجٹ نصف سے بھی کم جاری کیا گیا

حیدرآباد۔/10 ڈسمبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت نے آئندہ مالیاتی سال اقلیتی بہبود کے بجٹ میں اضافہ کا فیصلہ کیا ہے تاہم جاریہ سال کے بجٹ کی اجرائی اور خرچ کی تفصیلات کا جائزہ لیں تو نصف سے بھی کم بجٹ ابھی تک جاری کیا گیا۔ محکمہ اقلیتی بہبود کے تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق اقلیتی بہبود کیلئے مقررہ 1130کروڑ روپئے میں سے 400کروڑ روپئے جاری کئے گئے اور مختلف اسکیمات کے تحت 358کروڑ روپئے خرچ کئے گئے ہیں جس میں شادی مبارک اسکیم کے 100کروڑ شامل ہیں اگر گرین چینل میں شامل اس اسکیم کی رقم کو علحدہ کردیا جائے تو اقلیتی بہبود پر تاحال صرف 258کروڑ روپئے ہی خرچ ہوئے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ اس خرچ شدہ بجٹ میں اقلیتی طلباء کی فیس بازادائیگی کے 85کروڑ اور اسکالر شپ کے 35کروڑ روپئے شامل ہیں۔ حکومت نے اسکالر شپ کیلئے 50کروڑ روپئے جاری کئے تھے جس میں سے 35کروڑ روپئے طلباء کے اکاؤنٹ میں جاری کئے گئے۔ اوورسیز اسکالر شپ اسکیم کے تحت حکومت نے پہلی قسط کے طور پر 12 کروڑ 50لاکھ روپئے جاری کئے اور 210منتخب امیدواروں کو پہلی قسط کی اجرائی کیلئے ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفیسرس کو 11کروڑ 76لاکھ روپئے جاری کئے گئے۔ حیدرآباد کے بشمول دیگر اضلاع میں منتخب طلباء کو پہلی قسط کی اجرائی میں تاخیر کی شکایات ملی ہیں۔ حکومت نے پہلی قسط کی اجرائی کیلئے ابتداء میں 10نومبر کی حد مقرر کی تھی جسے بعد میں 10ڈسمبر کردیا گیا لیکن ابھی تک تمام منتخب طلباء کو اسکالر شپ کی پہلی قسط 5لاکھ روپئے جاری نہیں کئے گئے۔ بتایا جاتا ہے کہ عہدیدار اپنے طور پر نئے شرائط عائد کرتے ہوئے طلباء کو اسکالر شپ کی اجرائی میں تاخیر کررہے ہیں۔ تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق ابھی تک صرف 55طلباء کو اوورسیز اسکالر شپ کی پہلی قسط جاری کی گئی جس میں حیدرآباد کے 16اور رنگاریڈی کے 10طلباء شامل ہیں۔ حیدرآباد میں 137 طلباء کو اسکیم کیلئے مستحق قرار دیا گیا لیکن اجرئی انتہائی سست ہے۔ اولیائے طلباء نے شکایت کی کہ عہدیداروں نے حکومت کی ہدایت کے باوجود نئی شرائط کی تکمیل کو لازمی قرار دیا ہے اور بورڈنگ کارڈ کے ساتھ فضائی کرایہ کی تفصیلات اور اڈمیشن کارڈ کے ساتھ فیس کی تفصیلات طلب کررہے ہیں جو طئے شدہ شرائط میں شامل نہیں ہے۔ اقلیتی بہبود کے ذرائع نے بتایا کہ 210کے منجملہ 99 طلباء نے تمام درکار دستاویزات داخل کئے ہیں جبکہ دیگر طلباء کے دستاویزات کی جانچ کا کام ابھی جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT