Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / جاریہ سال ڈی ایس سی منعقد نہیں کیا جائے گا: ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری

جاریہ سال ڈی ایس سی منعقد نہیں کیا جائے گا: ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری

لڑکیوں کے ہاسٹل کا یکم ستمبر سے آغاز ، اسکولس ، اساتذہ اور طلبہ کا ریشنلائزیشن کا کام جاری
حیدرآباد ۔ 12 ۔ اگست : ( این ایس ایس ) : ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کڈیم سری ہری نے بتایا کہ تلنگانہ ریاست کی طالبات کو تعلیمی میدان میں حوصلہ افزائی کے لیے حکومت ماڈل اسکولس سے متصل 192 ہاسٹلس تعمیر کرے گی جہاں پر عصری سہولتوں کے علاوہ طعام اور قیام کی سہولت بھی رہے گی ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اس طرح کی سہولت کا آغاز جاریہ سال یکم ستمبر سے ہوگا ۔ انہوں نے آج یہاں سکریٹریٹ میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے یہ بات بتائی ۔ وزیر تعلیم نے مزید بتایا کہ حکومت نے 192 ہاسٹلس قائم کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے جس میں سے فی الحال 102 ہاسٹلس کی تعمیر مکمل کرلی گئی ہے جس پر 123 کروڑ روپئے خرچ کئے گئے ہیں ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے مزید بتایا کہ ہاسٹلس میں تمام سہولتوں کے ساتھ قیام و طعام کے لیے 247 کروڑ روپیوں کی منظوری دی گئی ہے ۔ ہر ایک ہاسٹل میں 100 طالبات کو اکیڈیمشن کی سہولت رہے گی جب کہ ماڈل اسکولس میں تمام بنیادی سہولتیں رہیں گی ۔ شعبہ انجینئرنگ کو مقررہ وقت میں تعمیر کرنے کے نشانہ کو مکمل کرنے کی ہدایت دی گئی ہے ۔ کڈیم سری ہری نے بتایا کہ جاریہ ماہ کے اختتام تک مابقی ہاسٹلوں کی تعمیر کو بھی مکمل کرلیا جائے گا ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ریاست تلنگانہ کے اسکولس میں بیت الخلاؤں کی تعمیر کے لیے حکومت 183 کروڑ روپیوں کی منظوری دی تھی جس میں 70 فیصد اسکولس میں بیت الخلاؤں کی تعمیر مکمل کرلی گئی ہے ۔ جس پر تاحال 117 کروڑ روپئے خرچ کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت نے ریاست میں لڑکیوں کی تعلیم اور ان کے تحفظ کا عزم کیا ہے اسی دوران ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری نے بتایا کہ ’’ ہم اس مرتبہ ڈی ایس سی منعقد نہیں کررہے ہیں ‘ چونکہ اس وقت اسکولس ، ٹیچر اور طلبہ کا ریشنلائیزیشن کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے اسکولس میں انگریزی اساتذہ کی قلت کو تعلیم پر منفی اثر ہونے کی اصل وجہ قرار دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اسپیشل گریڈ ٹیچرس سے زیادہ اسکول اسسٹنٹس کی ضرورت ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT