Friday , September 22 2017
Home / Top Stories / جاٹ احتجاج سے نمٹنے میں مرکز و ریاستی حکومت سے کوتاہی نہیں ہوئی

جاٹ احتجاج سے نمٹنے میں مرکز و ریاستی حکومت سے کوتاہی نہیں ہوئی

اپوزیشن کی تنقیدیں مسترد، بات چیت کے ذریعہ یکسوئی کی توقع تھی، راجیہ سبھا میں وزیرداخلہ راج ناتھ سنگھ کا بیان

نئی دہلی 9 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہریانہ میں جاٹ طبقہ کے تحفظات کے لئے احتجاج سے نمٹنے کے معاملہ میں مرکز یا ریاستی حکومت سے کوئی کوتاہی نہیں ہوئی۔ مرکزی وزیرداخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج یہ بات بتائی۔ ریاست میں تشدد کے واقعات پر اپوزیشن ارکان کی شدید برہمی کا سامنا کرتے ہوئے راج ناتھ سنگھ نے کہاکہ جہاں تک مرکزی حکومت اور ریاستی حکومت کا تعلق ہے ان کی نظر میں کوئی کوتاہی نہیں ہوئی ہے۔ انھوں نے کہاکہ حکومت ہریانہ کو توقع تھی کہ جاٹ طبقہ کے قائدین سے بات چیت کے ذریعہ تحفظات کے مسئلہ کا کوئی حل تلاش کرلیا جائے گا لیکن ایک واقعہ کے بعد احتجاج نے تشدد کی شکل اختیار کرلی۔ انھوں نے اس واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ بی ایس ایف کو احتجاجیوں پر فائرنگ کرنی پڑی جس میں تین افراد ہلاک ہوئے تھے۔

راجیہ سبھا میں اضافی سوالات کا جواب دیتے ہوئے راج ناتھ سنگھ نے کہاکہ مرکز نے خصوصی ہدایات جاری کی تھیں۔ اس کے علاوہ ریاستی حکومت کے پاس خود اس کی انٹلی جنس اطلاعات بھی تھیں۔ حکومت ہریانہ کے پاس انٹلی جنس اطلاعات کے باوجود مرکز نے بھی 19 فروری کو ریاستی حکومت کو خصوصی ہدایات جاری کی تھیں۔ انھوں نے منوہر لال کھتر زیرقیادت حکومت کی اس مسئلہ سے نمٹنے میں ناکامی پر اپوزیشن کی نکتہ چینی کو مسترد کردیا۔ انھوں نے کہاکہ سابق ڈی جی پی پرکاش سنگھ کی زیرقیادت تحقیقاتی کمیشن قائم کیا گیا ہے جو مختلف پہلوؤں کا جائزہ لے گا۔ انھوں نے ارکان سے رپورٹ کا انتظار کرنے کی خواہش کی۔ پرتشدد واقعات کے بعد کارروائی کی تفصیلات بتاتے ہوئے وزیرداخلہ نے کہاکہ 2012 ء ایف آئی اار درج کئے گئے۔
ارون جیٹلی کا ہتک عزت مقدمہ، کجریوال اور دیگر کو سمن
نئی دہلی 9 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال اور عام آدمی پارٹی کے پانچ دیگر قائدین کو مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی کی دائر کردہ ہتک عزت شکایت پر عدالت نے بطور ملزم سمن جاری کیا۔ ان تمام کو 7 اپریل کو عدالت میں پیش ہونے کی ہدایت دی گئی ہے۔ چیف میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ سمپت داس نے کجریوال کے علاوہ کمار وشواس، اشوتوش، سنجے سنگھ، راگھو چڈھا اور دیپک باجپائی کو عدالت میں پیش ہونے کی ہدایت دی۔ ارون جیٹلی نے کجریوال اور دیگر عام آدمی پارٹی قائدین کے خلاف دہلی ڈسٹرکٹ کرکٹ اسوسی ایشن (ڈی ڈی سی اے) تنازعہ میں مبینہ طور پر ان کی ہتک کا الزام عائد کیا۔ ارون جیٹلی نے کہاکہ ان کے بارے میں توہین آمیز بیانات دیئے گئے کہ وہ اور ان کے خاندان نے اسپورٹس مینجمنٹ فرم 21 ویں سنچری میڈیا پرائیوٹ لمیٹیڈ کے ذریعہ مالی فائدے حاصل کئے ہیں۔ عدالت نے شکایت کنندہ کی بحث کی سماعت کے بعد فیصلہ محفوظ رکھا۔ عدالت نے اس سے پہلے ارون جیٹلی اور دیگر شکایت کنندہ گواہان کے بیانات قلمبند کئے تھے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT