Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / جاٹ کوٹہ تنازعہ :روہتک میں پرتشدد احتجاج، 2 ہلاک ،فوج طلب

جاٹ کوٹہ تنازعہ :روہتک میں پرتشدد احتجاج، 2 ہلاک ،فوج طلب

روہتک (ہریانہ) /19 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) جاٹ طبقہ کیلئے کوٹہ کا مطالبہ کرتے ہوئے کیا جانے والا احتجاج پرتشدد ہوگیا جس میں 2 ہلاک اور دیگر 21 زخمی ہوگئے جن میں سے ایک کی حالت تشویشناک ہے جسے گولیوں سے زخم آئے ہیں۔ فوج کو طلب کرلیا گیا ہے اشرار کو دیکھتے ہی گولی ماردینے کا حکم دیا گیا ہے ۔ ریاستی وزیر فینانس کی قیامگاہ ، سرکٹ ہاؤز اور بی جے پی کے دفتر پر حملے کئے گئے ۔ وزیر فینانس کی قیامگاہ کے روبرو کھڑی ہوئی کار نذرآتش کردی گئی اور سرکٹ ہاوز وزیر فینانس کی قیامگاہ اور ڈی جی پی کے دفتر پر سنگباری بھی کی گئی ۔(ابتدائی خبر صفحہ 5پر)

تحفظات کیلئے ہریانہ میں جاٹ برادری کا ایجی ٹیشن

چیف منسٹر پر تعصب کا الزام

چندرشیکھر ۔ 19 فبروری۔(سیاست ڈاٹ کام) ہریانہ میں جاٹ قائدین نے اپنی برداری کو دیگر پسماندہ طبقات کے کوٹہ کے تحت تحفظات کی فراہمی کیلئے قانون سازی کے بغیر ایجنسی ٹیشن واپس لینے سے انکار کردیا ہے ۔ اس دوران ایجی ٹیشن سے بدترین متاثرہ ضلع روہتک میں انٹرنیٹ اور موبائیل ایس ایم ایس خدمات معطل کردی گئی ہیں جہاں جاٹ طبقہ کے شدید احتجاج کے نتیجہ میں ریل اور روڈ ٹریفک بری طرح مفلوج ہوگئی ۔ احتجاجیوں نے الزام عائد کیا کہ چیف منسٹر منوہر لال کھتر ان کے مطالبہ کی تکمیل سے پس و پیش کررہے ہیں کیونکہ ’’ان کا تعلق اس برادری سے نہیں ہے‘‘ ۔ اس دوران ریاستی حکومت نے اس تعطل کو ختم کرنے کیلئے کُل جماعتی اجلاس طلب کی ہے ۔ تحفظات کیلئے جاٹ طبقہ کے ایجی ٹیشن کے سبب ہریانہ کے مختلف حصوں میں عام زندگی بری طرح متاثر ہوئی ۔ روہتک ، جند ، بھوانی ، سونی پت اور حصار کے بشمول ریاست کے کئی علاقوں میں پٹرول ، ڈیزل ، پکوان گیس ، ترکاریوں اور دودھ جیسی ضروری اشیاء کی سربراہی متاثر ہوئی ۔ روہتک میں ضلع حکام نے انٹرنیٹ اور ایس ایم ایس موبائیل خدمات کو غیرمعینہ مدت کیلئے معطل کردیا ہے ۔ معاشی طورپر پسماندہ طبقات کیلئے تحفظات کے کوٹہ میں اضافہ سے متعلق چیف منسٹر کھتر کی پیشکش کو مسترد کرتے ہوئے احتجاجیوں نے پانی پت کی کئی سڑکوں پر ٹریفک کی آمد و رفت کو روک دیا جس کے نتیجہ میں اُترپردیش کیلئے ٹریفک کی نقل و حرکت مفلوج ہوگئی ۔ ہریانہ روڈویز نے جاٹ ایجی ٹیشن کے پیش نظر کئی متاثرہ مقامات میں بس خدمات کو بند کردیا ۔ ضلع روہتک میں امتناعی احکام نافذ کردیئے گئے ہیں۔ جاٹ آرکشن سنگھرش سمیتی کے قومی صدر پشپال ملک نے چیف منسٹر منوہر لال کھتر پر ذات پات پر مبنی ذہنیت رکھنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی حکومت کی طرف سے جاٹ برادری کو تحفظات کی فراہمی کیلئے قانون سازی کئے جانے تک احتجاج جاری رہیگا ۔

TOPPOPULARRECENT