Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / ججوں کے تقررات کو تبادلے میں تاخیر

ججوں کے تقررات کو تبادلے میں تاخیر

نئی دہلی ۔ 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آج ہائیکورٹس کے ججوں اور چیف جسٹس کے تبادلوں اور تقررات پر کالجیم کے فیصلہ کو روبہ عمل لانے میں مرکزی حکومت کی ناکامی پر ناخوشی کا اظہار کیا ہے اور یہ سوال کیا ہیکہ اس معاملہ میں بے اعتمادی کیوں پائی جاتی ہے ؟اور اٹارنی  جنرل سے کہاکہ اس خصوص میں حکومت سے ہدایات حاصل کریں۔ چیف جسٹس ٹی ایس ٹھاکر کی زیرقیادت سہ رکنی بنچ نے مفاد عامہ کی درخواست پر سماعت کے دوران کہا کہ کالجیم نے ہائیکورٹ ججس کیلئے 75 ناموں کی تجویز (تبادلے اور تقررات) پیش کی ہے لیکن نامعلوم وجوہات کی بناء حکومت نے منظور نہیں کیا۔ پتہ نہیں یہ فائلس کہاں روک دی گئی ہیں۔ بنچ نے کہاکہ ججوں کے تبادلے کے معاملہ میں یہ بے اعتمادی کیونکر در آئی ہے۔ اٹارنی جنرل وجوہات کا پتہ چلا کر عدالت کو مطلع کرنا چاہئے۔ اس مسئلہ پر 1971 کے جنگی سورما لیفٹننٹ کرنل انیل کبوترا نے مفاد عامہ کی درخواست داخل کی۔ بنچ نے سماعت کے دوران یہ تاثر پیش کیا کہ ہائیکورٹس میں مخلوعہ جائیدادیں 43 فیصد تک پہنچ آئے اور ہائیکورٹس میں معرضہ التواء کیسیس 4 ملین ہے۔ پورا نظام مفلوج ہوگیا۔

 

انسداد دہشت گردی قوانین کا حکومت کی جانب سے استحکام : راجناتھ
نئی دہلی ۔ 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام) دہشت گردوں کی جانب سے سوشل میڈیا کے اپنی تشہیر کیلئے استعمال اور نئی دھمکیوں کے ابھر آنے پر مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے کہاکہ انسداد دہشت گردی قوانین اور قانونی تحفظ کو دہشت گردی کے خلاف کارروائی میں شامل کیا جارہا ہے۔ اس طرح تحقیقات کے بارے میں نیشنل کانفرنس کو جواب دیتے ہوئے مرکزی وزیرداخلہ نے تیقن دیا کہ قوانین کو مستحکم کیا جائے گا۔ خواتین کے خلاف جرائم پر حکومت کی تشویش کا بھی انہوں نے اظہار کیا۔

TOPPOPULARRECENT