Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / جرائم کی روک تھام کیلئے مجرمین میں خوف پیدا کرنے کا فیصلہ

جرائم کی روک تھام کیلئے مجرمین میں خوف پیدا کرنے کا فیصلہ

سائبرآباد میں جرائم کو ختم کرنے کا عزم ، کمشنر پولیس سندیپ شنڈالیہ کی پریس کانفرنس
حیدرآباد /21 ڈسمبر ( سیاست نیوز ) سائبرآباد کی سرزمین کو مجرمین کیلئے تنگ کردیا جائے گا ۔ بہتر پولیسنگ کیلئے فورس کی کمی کوئی معنی نہیں رکھتی ۔ سائبرآباد پولیس ہر چیالنج کا سامنا کرسکتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار کمشنر پولیس سائبرآباد مسٹر سندیپ شنڈالیہ نے کیا ۔ انہوں نے آج یہاں سائبرآباد پولیس کی سالانہ کارکردگی پر رپورٹ پیش کی ۔ اس خصوص میں سائبرآباد پولیس کی جانب سے پریس کانفرنس کا انعقاد عمل میں لایا گیا ۔ مسٹر سندیپ شنڈالیہ نے کہا کہ سائبرآباد پولیس جرائم پر قابو پانے کے ساتھ ساتھ مجرموں کو سزا دلانے پر خصوصی توجہ مرکوز کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کارکردگی میں مزید بہتری پیدا کرتے ہوئے مجرموں میں خوف پیدا کیا جائے گا اور ان کیلئے سائبرآباد کی سرزمین کو تنگ کردیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ سائبرآباد پولیس کمشنریٹ کی تقسیم اور راچہ کنڈہ کمشنریٹ کے قیام کے بعد سائبرآباد حدود میں عملہ کی کمی میں مزید اضافہ ہوگیا ہے ۔ کمشنر پولیس نے بتایا کہ جرائم پر قابو پانے کیلئے سائبرآباد پولیس موثر اقدامات کر رہی ہے اور ڈاکوؤں ، سارقوں ، رہزنوں اور دہشت گردوں کی گرفتاری کیلئے عملہ کو خصوصی تربیت دی جارہی ہے ۔ سابقہ تجربوں اور کاروائیوں کو دیکھتے ہوئے عملہ کو ٹاکٹیکل ٹریننگ دی جارہی ہے ۔ سائبرآباد حدود میں جاریہ سال گذشتہ سال کی بہ نسبت جرائم میں کمی ریکارڈ کی گئی ہے ۔ لیکن خواتین کے تحفظ کیلئے جاری اقدامات کے باوجود عصمت ریزی کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے جبکہ رہزنی کی وارداتوں میں پولیس کی چوکسی اور غیر ضروری مستعدی بے فیض ثابت ہوئی ۔ ان واقعات میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے جو گذشتہ سال کے مقابل دگنی ہوگئی ہے ۔ اس کے علاوہ اغواء کے واقعات میں بھی اضافہ ریکارڈ کیا گیا ۔ جاریہ سال سائبرآباد پولیس کمشنریٹ حدود میں 3656 حادثات کے مقدمات درج کئے گئے جن میں 988 شہری ہلاک ہوگئے اور ان حادثات کے سبب 3447 شہری زخمی ہوئے جو گذشتہ سال کی بہ نسبت کم ہوئے ۔جبکہ اوٹر رنگ روڈ پر پیش آئے 1046 حادثات میں 47 شہری ہلاک اور 119 شہری زخمی ہوگئے ۔ کمشنر پولیس نے بتایا کہ سائبرآباد کا رقبہ اب 3600 کیلومیٹر کا ہوگیا ہے اور آبادی تقریباً 42 لاکھ پائی جاتی ہے ۔ جو سال 2011 کی مردم شماری کے مطاق ریکارڈ کی گئی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ سائبرآباد کی تشکیل اور اب اس کے رقبہ میں اضافہ کے بعد عملہ کی شدید قلت پائی جاتی ہے ۔

 

انہوں نے بتایا کہ سائبرآباد پولیس فورس کل 1900 ملازمین کے عملہ پر مشتمل ہے جن میں 1500 سیول اور 400 اے آر کے کانسٹیبل پائے جاتے ہیں جبکہ ایک ہزار ہوم گارڈز کی خدمات لی جارہی ہے ۔ اس کے علاوہ مزید 2 ہزار کیلومیٹر کے رقبہ کا اضافہ ہوا ہے اور 380 پولیس ملازمین کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ لاء اینڈ آرڈر کے پولیس اسٹیشنوں کے علاوہ ٹریفک پولیس اسٹیشن کی تعداد میں اضافہ کیاگیا ہے ۔ لیکن عملہ کی کمی سے مسائل پائے جاتے ہیں ۔ کمشنر پولیس سائبرآباد مسٹر سندیپ شنڈالیہ نے بتایا کہ اس خصوص میں حکومت کو سفارش روانہ کی جاچکی ہے اور حکومت نے بھی مخلوعہ جائیدادوں کی بھرتی کے علاوہ جائیدادیں مختص کرنے کا ارادہ کیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ فی الحال سائبرآباد میں 6500 جائیدادیں مخلوعہ ہیں اور اے آر کی 800 جائیدادیں مخلوعہ پائی جاتی ہیں ۔ انہوں نے جرائم پر قابو پانے کیلئے جاری اقدامات کا تذکرہ کیا اور عملہ کی ستائش کی اور عملہ کو داد و تحسین پیش کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ مقدمات میں سزا دلانے کیلئے کافی حد تک کوششیں جاری ہیں ۔ کل 3600 مقدمات میں فیصلہ ہوا ہے اور ان میں 1439 افراد کو سزا سنائی گئی ہے جو تقریباً 40 فیصد ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ پولیس سی سی ٹی وی کیمروں کی مدد سے 60 تا 70 فیصد مقدمات کی یکسوئی عمل میں لائی جارہی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ شی ٹیم میں عملہ کی کمی تعجب خیز سطح تک کم پائی جاتی ہے ۔ باوجود اس کے مثالی اقدامات جاری ہیں اور سوشیل میڈیا پر نظر رکھنے والی ٹیم ہر وقت ضروری و اہم اطلاعات شی ٹیم کو فراہم کی جارہی ہے جس کے سبب یہ اقدامات جاری ہیں ۔ شی ٹیم نے جاریہ سال 300 مقدمات پر کارروائی کی اور 495 مقدمات درج کرتے ہوئے 540 افراد کی کونسلنگ کی گئی جس میں کئی افراد کے خلاف مقدمات درج کیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ سائبرآباد کے حدود میں آئے دن بندوبست سے مصروف رہنے کے بعد بھی پولیس مثالی اقدمات کو انجام دیتے ہوئے اپنی کارکردگی میں بہتری پیدا کر رہی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ سائبرآباد پولیس کمشنریٹ حدود میں بہت جلد سائبرآباد سیکوریٹی کونسل کی طرز پر فارماسٹیکل کمپنیوں کیلئے نئی پالیسی تیار کی جائے گی ۔ اس موقع پر جوائنٹ کمشنر سائبرآباد مسٹر اسٹیفن رویندرا کے علاوہ ڈپٹی کمشنرس آف پولیس اور دیگر اعلی عہدیدار موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT