Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / جسٹس کارنن کی گرفتاری کیلئے کولکتہ پولیس کی چینائی میں آمد

جسٹس کارنن کی گرفتاری کیلئے کولکتہ پولیس کی چینائی میں آمد

چینائی۔ 10 مئی (سیاست ڈاٹ کام) کولکتہ ہائیکورٹ کے ایک جج جسٹس سی  ایس کارنن کو توہین عدالت کے ایک مقدمہ میں سپریم کورٹ کی طرف سے چھ ماہ کی قید دیئے جانے کے ایک دن بعد انہیں گرفتار کرنے کیلئے کولکتہ پولیس کی ایک ٹیم آج چینائی پہنچ گئی۔ غیرتوثیق شدہ اطلاعات کے مطابق کارنن فی الحال ٹاملناڈو میں نہیں ہیں۔ باور کیا جاتا ہیکہ پڑوسی ریاست آندھراپردیش کے مقام سری کلاہستی میں ہیں اور توقع ہیکہ آج شام چینائی واپس ہوں گے۔ یہ جج گذشتہ روز سپریم کورٹ کی طرف سے فیصلہ کے اعلان سے قبل وہاں پہنچے تھے اور ایک گیسٹ ہاؤز میں قیام پذیر ہیں جہاں انہوں نے کل شام میڈیا سے خطاب بھی کیا تھا۔ مقامی پولیس کے مطابق کولکتہ پولیس نے سپریم کورٹ احکام پر عمل آوری کیلئے چینائی میں اپنے ہم منصبوں سے بات کی۔ گیسٹ ہاؤز کے باہر وکلاء کے ایک گروپ نے احتجاج کیا اور الزام عائد کیا کہ جسٹس کارنن کو  نشانہ بنایا گیا ہے۔ پولیس نے کہا کہ گڑبڑ کے اندیشوں کے تحت سرکاری گیسٹ ہاؤز کے گیٹس بند کردیئے گئے تھے۔ یہ پہلا موقع ہیکہ کسی برسرخدمت جج کو سپریم کورٹ نے توہین عدالت پر سزائے قید دی ہے۔

TOPPOPULARRECENT