Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / جشن آزادی پر خون کا عطیہ، ابنائے وطن کی خدمت کا جذبہ

جشن آزادی پر خون کا عطیہ، ابنائے وطن کی خدمت کا جذبہ

شاہی مسجد نامپلی اور چارمینار کے قریب کیمپس، مولانا حافظ احسن بن محمد الحمومی کا بیان
حیدرآباد۔13اگسٹ (سیاست نیوز) شہر حیدرآباد میںاس مرتبہ جشن آزادی تقاریب کا نیا انداز دیکھنے کو ملے گا اور شہریان حیدرآباد 70ویں جشن آزادی کے موقع پر خون کا عطیہ دیتے ہوئے ابنائے وطن کی خدمت کے جذبہ کو فروغ دیں گے۔ 70ویں جشن آزادی کے موقع پر شہر حیدرآباد میں شاہی مسجد باغ عامہ کے علاوہ تاریخی چارمینار کے دامن میں خون کا عطیہ کیمپ لگایا جائے گا جہاں سینکڑوں نوجوانوں کی جانب سے ملک کیلئے خون کا عطیہ دیئے جانے کا امکان ہے۔ شاہی مسجد باغ عامہ میں بعد نماز ظہر خون کا عطیہ کیمپ بضمن یوم آزادی منعقد ہوگا جہاں مصلیان مسجد کے علاوہ دیگرمسلم و غیر مسلم نوجوان پہنچ کر خون کا عطیہ دیں گے۔ مولانا حافظ احسن بن محمد الحمومی و مصلیان شاہی مسجد کی جانب سے منعقد کئے جانے والے اس خون کے عطیہ کیمپ کے متعلق جاری مہم میں یہ کہا جا رہا ہے کہ ’ ہمارا خون نہ بہاؤ‘ یہ ملک کے کام آئے گا۔ مولانا حافظ احسن بن محمد الحمومی نے بتایا کہ جشن آزادی کے حقیقی مقصد و منشاء اور ابنائے وطن کے درمیان باہمی رواداری کے فروغ کے لئے یوم آزادی کے موقع پر خون کے عطیہ کیمپ کا انعقاد عمل میں لایاجا رہاہے اور اس کیمپ کے دوران وصول ہونا والا خون کا عطیہ تھلیسمیا کے متاثرین کیلئے دیا جائے گا۔اسی طرح تاریخی چارمینار کے دامن میں لائنس کلب آف حیدرآباد چارمینار سینٹینیل کے زیر اہتمام 70ویں یوم آزادی کے موقع پر خون کا عطیہ کیمپ منعقد کیا جائے گا ۔ لائن محمد عبدالنعیم صدر لائنس کلب آف حیدرآباد چارمینار سینٹینیل نے بتایا کہ جشن آزادی کے موقع پر اس خون کے عطیہ کیمپ کے انعقاد کا مقصد ملک کو تھلیسمیا جیسی بیماری سے آزادی دلوانے کی جدوجہد کرنا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ نوجوانوں میں حب الوطنی کے جذبہ کو فروغ دینے کیلئے کی جانے والی اس کوشش کو مختلف گوشوں کی تائید حاصل ہورہی ہے ۔ انہوں نے خون کے عطیہ کیمپ کے متعلق کہا کہ سرحدو ںپر افواج اپنا خون بہا کر ان کی حفاظت کر رہے ہیں لیکن ملک کے اندر ہم اپنے خون کے عطیہ کے ذریعہ ضرورت مندوں کی جان بچانے میں کلیدی کردار ادا کرسکتے ہیں۔چارمینار کے دامن میں منعقد ہونے والے خون کے عطیہ کیمپ کے اوقات کار دوپہر ایک تا 5 بجے شام ہوں گے اور اس عطیہ کیمپ میں خون کا عطیہ دینے کے خواہشمندوں نے ابھی سے رجسٹریشن کروانا شروع کردیا ہے۔ جناب مرزا عبدالعلیم بیگ تھلیسمیا سکل کئیر سوسائٹی نے بتایا کہ تھلیسمیا کے متاثرین کو مسلسل خون درکار ہوتا ہے اور ان کی ضرورت صرف خون کے عطیہ کے ذریعہ ہی پوری کی جا سکتی ہے اسی لئے خون کے عطیہ کو فروغ دیئے جانے کی ضرورت ہے۔ملک میں جاری فرقہ وارانہ منافرت اور متعصب ذہنیت کے فروغ کی کوششوں کے دوران مسلم شخصیتوں کی جانب سے کی جانے والی ان کوششوں سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ جب کبھی اس گلستاں کو لہو درکار ہوگا اس ملک میں بسنے والے سیکولر عوام اور مسلمان شانہ بشانہ کھڑے ہوں گے۔

TOPPOPULARRECENT