Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / جشن میلاد اظہار نعمت ، صحیح طریقہ و سلیقہ اپنانے کا مشورہ

جشن میلاد اظہار نعمت ، صحیح طریقہ و سلیقہ اپنانے کا مشورہ

غیر شرعی کاموں سے اجتناب پر زور ، مولانا غوثوی شاہ کا بیان
حیدرآباد ۔ 14 ۔ دسمبر : ( پریس نوٹ ) : صدر آل اِنڈیا مسلم کانفرنس مولانا غوثوی شاہ نے بروز اتواربیت النوربرادرانِ اِسلام سے مخاطب ہوکر کہا کہ اللہ تعالیٰ نے حضرت عیسیٰ ؑ اور حضرت یحییٰ ؑ کی میلاد یوم ولادت پر اِن الفاظ میں سلام بھیجا ہے وَسلام عَلَیْہِ یَوم وُلِدoیحییٰ ؑ پر سلام جس دن وہ پیدا ہوئے۔تو حضورؐ سَرور کونین محمد مصطفیٰ ﷺ کی یومِ ولادت کا کیا کہنا‘ جو سیّد الْانبیاء ؑ ہے حضرت یحییٰ ؑ اور حضرت عیسیٰ ؑ پر تو صرف ایک وقت سلام بھیجا گیا جبکہ حضورؐ پر اِنّ اللّٰہ وَ مَلائِکتہُ یُصلونَ عَلی النّبیکہہ کر حق تعالیٰ حضورؐ پر ہمیشہ ہمیشہ دُرود و سلام بھیج رہے ہیں۔ حدیثِ صیح مسلم کی ایک روایت کے مطابق حضور ؐ خود ہر پیر کے دن اپنی میلاد مناتے تھے اور اِس دن حضرت بلالؓ کو روزہ رکھنے کا حکم بھی دیا ۔واضح باد کہ اللہ نے نزول قرآن پر’’ فَلیفرحُوْا‘‘خوشی منانے کا حکم دیا تو جو صاحب ِقرآن ہے جو حامِل قرآن ہے جو بولتا قرآن ہے اُنکی آمد مبارکہ پر خوشی منانا تو فرضی الفرائض ہے جنکی وجہ سے قرآن نماز روزہ حج یہ سب نعمتیں ملیں لہذا حضورؐ نے فرمایا کہ ذِکر الانبیاء ؑعبادۃ ‘‘کہ انبیاء ؑ کی یاد منانا عبادت ہے تو حضورؐ کی میلادِ مبارک پر خوشی کا اظہار کرنا بھی عبادت ہے ، حضرت علامہ ابن جُرزیؒ نے جشن میلاد النبیؐ کے متعلق فرمایا کہ ذٰلِکَ الارغام الشَیاطین وسُروراھل الْایمانْیعنی جشن میلاد شیاطین کی تذلیل اور اہل ایمان کے لئے خوشی کا باعث ہے جشن میلاد النبیؐ منانے کے قائِلین میں نامور محدثین اور علماء میں حضرت اِمام نوویؒ ‘حضرت اِمام سخادالباریؒ ‘حضرت اِمام جلال الدین سیوطیؒ ‘ حضرت اِمام ابن جوزی ؒ ‘ حضرت شاہ ولی اللہ محدث دہلویؒ ‘ حضرت شاہ عبدالحق محّدث دہلویؒ اور حضرت علّامہ ابن کیثرؒ شامل ہیں۔ وَاَمَّا بِنعمَۃِ رَبِّکَ فَحّدّثْ کے تحت حضورؐ کی آمدِمبارکہ پر اظہار نعمت اورخوشی منانے کا طریقہ یہ ہے کہ دو رکعت نفل نمازحضورؐ کی ولادت کی خوشی میںسجدہِ شکرانہ کے طور پر پڑھی جائے ۔ کچھ خیر خیرات بھی کی جائے لوگوں کو کھانا کِھلایا جائے‘مٹھائی تقسیم کرے ایک دوسرے کو مبارک باد دیں ۔مگر اس دن کوئی غیر شرعی کام نہ ہو لوگوں پر ارّاش پھیکنا‘ گُلال پھیکنا‘ڈی جے کی آواز پر رقص کرنا،کسی فرقے کے خلاف نعرے مارنا‘ اور حضورؐ کی گنبدِپاک کا ماڈل بنا کر سڑکوں پر جانا یا کہیں فٹ پاتھ پر ایستادہ کرنا یہ سب کام اللہ اور اُسکے رسولؐ کی ناراضگی کا موجب ہیں۔ اللہ ہر ایک کو نیک توفیق عطا کرے اور حضورؐ کی محبت کے اظہار کا صحیح طریقہ اورسلیقہ عطا کرے۔ وَصَلّٰے اللّٰہُ تَعالیٰ عَلی خَیر خَلْقِہِ سَیّدِنَا وَنَبیّنَامُحَمَّد وَاٰلہِ وَسَلِّم۔

TOPPOPULARRECENT