Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / جلسہ رحمتہ للعالمینؐ سے بلدی انتخابات کا عملاً آغاز

جلسہ رحمتہ للعالمینؐ سے بلدی انتخابات کا عملاً آغاز

حیدرآباد۔ 25 ۔ ڈسمبر ( سیاست نیوز) حیدرآباد ، حیدرآبادیوں کا ہے اور حیدرآباد سے حیدرآبادیوں کو منتخب کرنا ہوگا۔ صدر مجلس اتحاد المسلمین اسدالدین اویسی نے جلسہ یوم رحمتہ للعلمینؐ سے خطاب کے دوران یہ بات کہی۔ انہوں نے سالانہ جلسہ میلاد النبیؐ کے موقع پر اپنے خطاب کے دوران کانگریس ، تلگو دیشم اور بھارتیہ جنتا پارٹی کو سخت تنقید کانشانہ بنایا۔  صدر مجلس نے یوم رحمتہ للعلمینؐ کے موقع پر خطاب کے دوران مجوزہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے انتخابات کی انتخابی مہم کا باضابطہ آغاز کرتے ہوئے حریفوں کو نشانہ بنانا شروع کردیا اور خطاب کے دوران انہوں نے آلیر انکاؤنٹر کے شہداء کو بھی یاد کیا ۔ انہوں نے اپنے خطاب کے دوران بتایا کہ مجلس 70 تا 75 بلدی نشستوں پر مقابلہ کرے گی ۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ان سے بڑھ کر حیدرآبادی کوئی نہیں ہے۔ اسی لئے صرف حیدرآبادی کو منتخب کرنا ہوگا ۔ حیدرآباد کو انہوں نے صرف حیدرآبادیوں کا قرار دیتے ہوئے کہا کہ بہار میں انتخابات کے دوران انہیں باہری کہا گیا تھا اسی طرح انہوں نے بنگلور میں مجلس کو ہوئی شکست کو بھی یاد کیا اور کانگریس کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔ اسد الدین اویسی نے تقریر کے دوران اندرون پارٹی اختلافات کے اشارے دیتے ہوئے کہا کہ جو لوگ غداری کا سوچ رہے ہیں، وہ خاموش ہوجائیں چونکہ ایسا کرنے سے صرف نقصان ہوگا۔ صدر مجلس کے اس بیان سے ایسا محسوس ہوتاہے کہ اندرون پارٹی اختلافات میں بڑی حد تک اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ سے اس طرح کے جملوں کا استعمال کرنا پڑا۔ انہوں نے بابری مسجد کی جگہ پر وی ایچ پی کی جانب سے پتھر لائے جانے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ سماج وادی پارٹی حکومت کی یہ ذمہ داری تھی کہ وہ ان پتھروں کو ضبط کرتی۔ صدر مجلس نے گستاخ رسولؐ کو ولد الحرام قرار دیتے ہوئے کہا کہ گستاخ کی وضاحت موجود ہے ۔ انہوں نے نوجوانوں کو نکاح کو آسان بنانے اور بنا جہیز کے علاوہ بغیر طعام و لوازمات کے نکاح انجام دینے کی تلقین کی۔ اسد اویسی نے  سیاسی خطاب کے دوران نریندر مودی کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا۔

TOPPOPULARRECENT