Tuesday , September 26 2017
Home / دنیا / جماعت اسلامی قائد میر قاسم علی کی سزائے موت برقرار

جماعت اسلامی قائد میر قاسم علی کی سزائے موت برقرار

ڈھاکہ ۔ 8 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش سپریم کورٹ نے آج ایک اعلیٰ سطحی اسلامی قائد کی سزائے موت کو برقرار کھا ہے جن پر جنگی جرائم کے ارتکاب کا الزام ہے جس کے وہ 1971ء کی جنگ آزادی کے دوران مرتکب ہوئے تھے۔ اس طرح اب ان کی سزائے موت پر عمل آوری کی راہ ہموار ہوگئی ہے۔ چیف جسٹس سریندر کمار سنہا نے اپیکس کورٹ کا فیصلہ سناتے ہوئے جماعت اسلای کے قائد اور میڈیا کی اعلیٰ ترین شخصیت میر قاسم علی کی درخواست کو مسترد کردیا ہے جنہیں بنگلہ دیش کی جنگ آزادی کے دوران اغواء اور قتل جیسے سنگین جرائم کا مرتکب قرار دیا گیا ہے۔ جس وقت فیصلہ سنایا گیا اس وقت کمرہ عدالت کھچاکھچ بھرا ہوا تھا اور جج نے اعلان کردیا کہ سزائے موت برقرار ہے۔ میر قاسم علی پر الزام ہیکہ انہوںنے البدر کے نام سے ایک ملیشیا عقوبت خانہ قائم کر رکھا تھا جہاں کئی افراد کا قتل عام کیا گیا۔ عدالت نے ان کے خلاف بیشتر الزامات کو درست پایا۔ میر قاسم علی 1971ء میں پاکستان کے  خلاف بنگلہ دیش کی آزادی کے سخت مخالف تھے۔

TOPPOPULARRECENT