Thursday , August 17 2017
Home / پاکستان / جماعت الدعوۃ کی ہائیکورٹ میں درخواست

جماعت الدعوۃ کی ہائیکورٹ میں درخواست

لاہور۔ 20 اپریل (سیاست ڈاٹ کام)پاکستان میں کالعدم جماعت الدعوۃ کی جانب سے لاہور میں قائم کی گئی شرعی عدالت کی طرف سے سمن موصول ہونے کے بعد ایک شہری نے ہائی کورٹ میں ملک میں متوازی عدالتی نظام قائم کرنے اور آئین کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں درخواست دائر کی ہے۔درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ جماعت الدعوۃ نے ملک میں متوازی عدالتی نظام قائم کر رکھا ہے جو غیر آئینی اور غیر قانونی ہے۔یہ درخواست سمن آباد کے رہائشی ایک پراپرٹی ڈیلر خالد سعید کی جانب سے دائر کی گئی ہے۔خالد سعید نے بی بی سی کو بتایا کہ انھیں جماعت الدعوۃ کی مسجد قادسیہ کی جانب سے عدالتی سمن کی طرز کا ایک نوٹس موصول ہوا جس پر ’دارالقضا الشرعی‘ اور ’ثالثی شرعی عدالت عالیہ‘ لکھا ہوا ہے۔’میرے خلاف محمد اعظم نامی شخص نے شکایت کی تھی۔ جس سے میرا لین دین کا تنازعہ ہے۔ 19 جنوری کو جماعت الدعوۃ کی طرف سے جاری کیے گئے نوٹس میں تنبیہ کی گئی کہ اگر میں مسجد قادسیہ میں پیش نہ ہوا تو میرے خلاف یکطرفہ کارروائی کر دی جائے گی اور یہی نہیں مجھے دھمکی آمیز فون بھی آتے رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT