Sunday , August 20 2017
Home / Top Stories / جموں و کشمیر کی صورتحال پر حکومت کا دعویٰ غلط: کانگریس

جموں و کشمیر کی صورتحال پر حکومت کا دعویٰ غلط: کانگریس

وادی کشمیر کی حقیقی صورتحال پر ملک کو اعتماد میں لینے کا مطالبہ، پارلیمنٹ ہائوس میں چدمبرم، غلام نبی آزاد کا بیان

نئی دہلی، 19 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) جموں وکشمیر میں سکیورٹی کی صورتحال میں بہتری کے حکومت کے دعوے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کانگریس نے آج مودی حکومت پر نکتہ چینی کی اور وادیٔ کشمیر کی حقیقی صورتحال نیز ریاست میں حالات کو معمول پر لانے کیلئے جاری اقدامات پر ملک کو اعتماد میں لینے کا مطالبہ کیا۔ پارلیمنٹ ہاؤس کے احاطے میں نامہ نگاروں کے سامنے مشترکہ بیان دیتے ہوئے کانگریس کے سینئر قائدین پی چدمبرم اور غلام نبی آزاد نے کہا کہ جموں و کشمیر میں تشدد کے واقعات کا سلسلہ جاری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر میں روزانہ فوجی جوانوں کی موت ہورہی ہے، عام شہریوں کا قتل ہورہا ہے اور تشدد کے واقعات میں سیکڑوں لوگ زخمی ہورہے ہیں، اس لئے حکومت کا یہ دعویٰ کرنا کہ سلامتی کی صورتحال میں بہتری ہوئی ہے، ملک کے عوام کو گمرا ہ کرنا ہے۔ چدمبرم نے کہا کہ وادی کشمیر میں سلامتی کی صورتحال اب مزید ابتر ہوگئی ہے ۔ صرف گزشتہ ایک ہفتے پر نظر ڈالنے سے ظاہر ہوجاتا ہے کہ تشدد کے متعدد بڑے واقعات ہوئے ہیں۔ بالخصوص 10جولائی کے بعد سے روزانہ کشمیر میں ہلاکتوں کی خبریں مل رہی ہیں۔ رواں مہینے 18 جولائی تک آٹھ یاتریوں، چھ جوانوں اور ایک بچے کو قتل کیا جاچکا ہے ۔ ان کے علاوہ، شہریوں اور سلامتی دستوں کے درمیان ہونے والی متعدد جھڑپوں میں بے شمار افراد زخمی ہوئے ہیں۔ چدمبرم نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ ملک کے عوام کو کشمیر کی حقیقی صورتحال سے باخبر کرے۔

جموں و کشمیر کی صورتحال پر پورا ملک تشویش میں مبتلا ہے ، اس لئے ملک کے عوام کو اس معاملے میں اعتماد میں لیا جانا چاہئے۔ انہوں نے این ڈی اے حکومت کو کشمیر کی صورتحال کو کنٹرول کرنے میں ناکام رہنے کا مورد الزام ٹھہراتے ہوئے کہا کہ کانگریس کشمیر کی صورتحال میں بہتری کے حکومت کے دعوے کو حقیقت اور عقل سلیم کے برعکس اور گمراہ کن خیال کرتے ہوئے اس کو مسترد کرتی ہے اور مرکزی حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ ملک کے عوام کو جموں و کشمیر میں سلامتی کی صورتحال معمول پر لانے کیلئے کئے جانے والے اقدامات پر اعتماد میں لے۔ کانگریس نے الزام لگایا کہ جموں وکشمیر میں مسلسل تشدد ہو رہا ہے۔ آئے دن وہاں جوان شہید ہو رہے ہیں، عام لوگ مارے جا رہے ہیں اور سینکڑوں زخمی ہو رہے ہیں، اس لئے حکومت کا وہاں حالات ٹھیک ہونے کا دعویٰ گمراہ کرنے والا ہے۔ چدمبرم نے کہا کہ جموں و کشمیر کے حالات بہت خراب ہو گئے ہیں۔ گزشتہ ایک ہفتے کے دوران ہی ریاست میں تشدد کے بڑے واقعات ہوئے ہیں۔ گزشتہ 10 جولائی کے بعد سے وہاں تقریبا ہر روز لوگوں کی جان جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو وہاں کی صحیح صورحال بتانی چاہیے ۔ پورا ملک جموں و کشمیر کے حالات کے تعلق سے فکر مند ہے اس لئے ملک کے عوام کو اس بارے میں اعتماد میں لیا جانا چاہیے ۔ آزاد نے کہا کہ صورتحال انتہائی خراب ہو گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT