Friday , August 18 2017
Home / ہندوستان / جموں و کشمیر ہندوستان کا اٹوٹ حصہ نہیں : رکن اسمبلی

جموں و کشمیر ہندوستان کا اٹوٹ حصہ نہیں : رکن اسمبلی

سرینگر ۔ 20 جون (سیاست ڈاٹ کام) آزاد رکن اسمبلی شیخ رشید جو تنازعات پیدا کرنے کیلئے شہرت رکھتے ہیں، آج اسمبلی میں کسی علحدگی پسند کی طرح تقریر کرتے نظر آئے اور انہوں نے کہا کہ ریاست جموں و کشمیر ہندوستان کا اٹوٹ حصہ نہیں ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ استصواب عامہ کروایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اگر آپ مجھے جیل بھیج دیں یا رکنیت کا نااہل قرار دیں یا انتخابات میں حصہ لینے پر امتناع عائد کردیں یا پھانسی پر لٹکا دیں لیکن آپ مجھے کشمیر کے بارے میں اپنا موقف تبدیل کرنے پر مجبور نہیں کرسکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر نہ تو ہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے اور نہ پاکستان کی شہہ رگ ہے۔ آپ کو تاریخی حقیقت سمجھنی ہوگی اور حکومت ہند سے کہنا ہوگا کہ استصواب عامہ کا کوئی متبادل نہیں ہے۔ رکن اسمبلی نے یہ بیان دیکر گذشتہ سال ایک بڑا تنازعہ کھڑا کردیا تھا اور کہا تھا کہ بیف کا تنازعہ یا رکن اسمبلی کے ہاسٹل میں بیف سے ارکان اسمبلی کی ضیافت کوئی غلط کام نہیں تھا۔ بی جے پی اور کانگریس ارکان نے ان کے تبصرہ کے خلاف احتجاج کیا۔ رشید نے کہا کہ وہ ہندوستان کی خودمختاری کے خلاف نہیں ہیں، صرف جموں و کشمیر کے بارے میں کہہ رہے ہیں جو ہندوستان اور پاکستان کے درمیان جھگڑے کی بنیادی وجہ ہے۔ اسمبلی کو کوئی اختیار نہیں ہیکہ اقوام متحدہ کی قراردادوں کو اٹھا کر پھینک دیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ہند کا دعویٰ ہیکہ ریاست کے عوام حکومت ہند کی تائید میں ہیں کیونکہ انہوں نے کثیر تعداد میں ووٹ ڈالے ہیں۔ پاکستانی مقبوضہ کشمیر میں مقیم کشمیری پاکستان سے خوش نہیں ہیں۔ یہی وجہ ہیکہ حکومت ہند استصواب عامہ سے گریز کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر کشمیر کے دونوں حصوں کے عوام ہندوستان کی تائید میں ہیں تو جموں و کشمیر ہندوستان کا اٹوٹ حصہ بن سکتا ہے۔ چنانچہ استصواب عامہ کی تجویز میں کوئی خرابی نہیں ہے۔ رشید کے بیان پر بی جے پی کے ترجمان خالد جہانگیر نے تنقید کرتے ہوئے کہاکہ اگر رشید کا خیال ہیکہ جموں و کشمیر ہندوستان کا اٹوٹ حصہ نہیں ہے تو انہیں اسمبلی سے استعفیٰ دیدینا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT