Tuesday , August 22 2017
Home / سیاسیات / جمہوریت کو نقصان پہنچانے والوں کو شکست :سونیا

جمہوریت کو نقصان پہنچانے والوں کو شکست :سونیا

نئی دہلی، 13جولائی (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس صدر سونیا گاندھی نے اروناچل پردیش معاملے میں سپریم کورٹ کے فیصلے کو تاریخی قرار دیتے ہوئے آج امید ظاہر کی اس سے مرکزی حکومت اقتدارکا غلط استعمال کرنے سے باز آئے گی۔محترمہ گاندھی نے ایک بیان میں کہا کہ اس فیصلے سے آئینی وقار اور جمہوری قدروں کی خلاف ورزی کرنے والوں کی شکست ہوئی ہے اور اس سے آئین کے ذریعہ تفویض کردہ جمہوری قدریں مضبوط ہوں گی۔ انہوں نے کہا کہ اروناچل پردیش حکومت کو غیر آئینی طریقے سے ہٹایا گیا تھا ۔ کانگریس جمہوریت کو مضبو ط کرنے اور ملک کے وفاقی ڈھانچے کی حفاظت کرنے کے لئے اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ صدر کانگریس نے اس موقع پر اروناچل پردیش کے عوام کو مبارک باد دی۔

 

اروناچل پردیش سے متعلق عدالت کا فیصلہ کوئی دھکا نہیں: بی جے پی
نئی دہلی، 13جولائی(سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے آج کہا کہ اروناچل پردیش میں کانگریس حکومت بحال کرنے کے سپریم کورٹ کے فیصلے سے اسے کوئی دھکا نہیں لگا ہے ۔بی جے پی کے قومی سکریٹری شری کانت شرما نے نامہ نگاروں سے کہا کہ کانگریس کے داخلی چپقلش کی وجہ سے اروناچل پردیش میں آئینی بحران پیدا ہوا تھا ۔ ہم پارٹی کی باہر سے حمایت کررہے ہیں اور عدالت کے فیصلے کو بی جے پی کے لئے دھکا قرار دینا درست نہیں ہے ۔خیال رہے کہ سپریم کورٹ نے ایک تاریخی فیصلے میں آج اروناچل پردیش میں صدر راج کو منسوخ کردیا اور وہاں فوراً کانگریس حکومت کو بحال کرنے کا حکم دیا ہے ۔

مرکز سپریم کورٹ کے فیصلہ پر
عمل کرے گا:رجیجو
گوہاٹی، 13 جولائی (سیاست ڈاٹ  کام) وزیر مملکت برائے داخلہ کرن رجیجو نے آج کہاکہ مرکزی حکومت اروناچل پردیش کے معاملے میں سپریم کورٹ کے فیصلہ کی پیروی کریں گی۔مسٹر رجیجو نے یہاں نامہ نگاروں سے بات چیت میں کہا ‘ہم لوگ سپریم کورٹ کے فیصلے کا احترام کریں گے ۔ اس فیصلہ پرتمام لوگوں کو عمل کرنا ہوگا’۔انہوں نے کہاکہ ‘اروناچل پردیش میں پیداشدہ بحران میں مرکزی حکومت کا کوئی رول نہیں ہے ۔ حکومت کا اس معاملے سے کوئی واسطہ نہیں ہے ۔
مرکزی حکومت نے اروناچل پردیش کے گورنر کی صلاح پر کام کیا۔

TOPPOPULARRECENT