Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / جناب سید وقار الدین کو مولانا ابوالکلام آزاد قومی ایوارڈ

جناب سید وقار الدین کو مولانا ابوالکلام آزاد قومی ایوارڈ

ناسازی صحت کے سبب ایوارڈ کی رہائش گاہ پر حوالگی ، چیف منسٹر سے اظہار تشکر
حیدرآباد۔/12نومبر، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے مولانا ابوالکلام آزاد باوقار قومی ایوارڈ آج چیف ایڈیٹر ’رہنمائے دکن‘ جناب سید وقار الدین کو پیش کیا۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل اور ڈائرکٹر سکریٹری اردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور کے ہمراہ جناب وقار الدین کی قیامگاہ پہنچ کر یہ ایوارڈ حوالے کیا۔ ملک کے پہلے وزیر تعلیم مولانا ابوالکلام آزاد کے یوم پیدائش کے موقع پر یوم اقلیتی بہبود منایا جاتا ہے اور ہر سال کسی نامور شخصیت کو یہ ایوارڈ پیش کیا جاتا ہے۔ اس ایوارڈ کے تحت ایک لاکھ 25 ہزار روپئے کا چیک ، توصیف نامہ اور مومنٹو پیش کیا گیا۔ جناب وقار الدین کی شال پوشی بھی کی گئی۔ ایوارڈ حاصل کرتے ہوئے جناب وقار الدین نے مولانا آزاد سے منسوب اس قومی ایوارڈ کے حصول کو اپنے لئے باعث افتخار قرار دیا اور اعلان کیا کہ وہ ایوارڈ کی مساوی رقم شامل کرتے ہوئے اس سے مستحق صحافیوں کیلئے طبی امداد فراہم کریںگے۔ انہوں نے اعلان کیا کہ تلنگانہ تحریک میں سرگرم رول ادا کرنے والے جلیل پاشاہ اور اردو صحافی خرم نفیس کو طبی امداد کے طور پر فی کس 10 ہزار روپئے دیئے جائیں گے۔ اس موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے کہا کہ مولانا ابوالکلام آزاد ایک صحافی تھے اور چیف منسٹر نے قومی ایوارڈ کیلئے حیدرآباد کے ایک نامور صحافی وقار الدین کا انتخاب کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر نے اس نام کو منظوری دی ہے اور وقار الدین کی خدمات نہ صرف قومی بلکہ بین الاقوامی سطح پر شمار کی جاتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس سے قبل بھی قد آور شخصیتوں کو یہ ایوارڈ پیش کیا جاچکا ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ سید وقار الدین نے تلنگانہ تحریک کی بھرپور تائید کی تھی اور ان کی ملی خدمات کسی سے مخفی نہیں ہیں۔ فلسطین کے کاز کو حیدرآباد سے تقویت پہنچانے میں وقار الدین کا اہم رول ہے۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے جناب وقار الدین نے چیف منسٹر اور ڈپٹی چیف منسٹر سے اظہار تشکر کیا۔ انہوں نے اقلیتی بہبود کے عہدیداروں کی بھی ستائش کی۔ انہوں نے کہا کہ انہیں اس سے قبل بھی کئی ایوارڈ حاصل ہوئے ہیں تاہم وہ تلنگانہ حکومت کے اس ایوارڈ سے کافی خوش ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ’ رہنمائے دکن ‘ کے ذریعہ ہمیشہ فرقہ پرستی کے خلاف اور گنگاجمنی تہذیب کے فروغ کیلئے جدوجہد کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ اردو زبان کے فروغ کیلئے بھی اخبار نے نمایاں رول ادا کیا ہے۔ انہوں نے چیف منسٹر اور ڈپٹی چیف منسٹر کی درازی عمر کیلئے دعا کی اور حکومت کے فلاحی اقدامات کو سراہا۔ انہوں نے بتایا کہ صحتیاب ہونے کے بعد وہ شخصی طور پر چیف منسٹر سے ملاقات کرتے ہوئے ایوارڈ کیلئے اظہار تشکر کریں گے۔ یہ ایوارڈ کل نظام کالج پر منعقدہ یوم اقلیتی بہبود تقریب میں پیش کیا جانے والا تھا تاہم ناسازی مزاج کے سبب وقار الدین شرکت نہ کرسکے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے خیرمقدمی کلمات میں ایوارڈ کا تعارف کروایا جبکہ سکریٹری ڈائرکٹر اردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور نے شکریہ ادا کیا۔اس موقع پر نائب صدر نشین انڈو عرب لیگ ڈاکٹر میر اکبر علی خاں، مولانا سید شاہ مظہر حسینی صابری اور دوسرے موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT