Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / جنگجویانہ وطن پرستی کے سنگین مضمرات ، پائیدارامن کیلئے مذاکرات ناگزیر

جنگجویانہ وطن پرستی کے سنگین مضمرات ، پائیدارامن کیلئے مذاکرات ناگزیر

پاکستان کو پیشگی شرائط سے آگاہ کردیا جائے، سی پی ایم لیڈر سیتا رام یچوری کا مشورہ
نئی دہلی ۔ 24 ۔اگست (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان اور پاکستان کے درمیان مذاکرات کی منسوخی کو بدبختانہ قرار دیتے ہوئے سی پی ایم نے آج یہ الزام عائد کیا کہ اوفا (روس) میں طئے پائے معاہدہ پر مرکزی حکومت کے موقف میں خامیاں اور کمزوریاں پائی جاتی ہیں جہاں پر دونوں ممالک کے مشیران قومی سلامتی (نیشنل سیکوریٹی ایڈوائیزرس) کی سطح پر بات چیت کا فیصلہ کیا گیا تھا۔سی پی ایم کے جنرل سکریٹری مسٹر سیتا رام یچوری نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان جامع اور مبسوط مذاکرات کی ضرورت کو اجاگر کیا تاکہ سرحدوں پر کشیدگی کی روک تھام اور خوشگوار مستقبل کو یقینی بنایا جاسکے۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ مرتبہ بھی اسی بنیاد پر معتمدین خارجہ کی سطح کے مذاکرات منسوخ کردیئے گئے کہ پاکستانی سفارتکار نے کشمیر کے بعض علحدگی لیڈروں کو تبادلہ خیال کیلئے مدعو کیاہے۔ لہذا ہندوستان کو قبل از وقت یہ واضح کردینا چاہئے کہ اگر پاکستان علحدگی پسندوں سے بات چیت کرتا ہے تو مشیران قومی سلامتی (این ایس اے) سطح کے مذاکرات منعقد نہیں کئے جاسکے۔ سی پی ایم لیڈر نے بتایا کہ روس کے شہر اوفامیںوزیراعظم نریندر مودی اور ان کے پاکستانی ہم منصب نواز شریف کے درمیان طئے پائے معاہدہ میں اس شرط کا کہیں بھی تذکرہ نہیں کیا گیا ہے۔ جہاں پر این ایس اے سطح کی بات چیت پر اتفاق کیا گیا تھا، انہوں نے کہا کہ سفارتکاری کی تھوڑی بہت جانکاری رکھنے والے مذاکرات سے قبل بنیادی تیاری کی اہمیت سے واقف ہوتے ہیں لیکن مذاکرات کی منسوخی سے ہندوستان کی کمزوریاں اور خامیاں ظاہر ہوگئی ہیں۔ مرکزی حکومت سے ان کوتاہیوں کا ازالہ کرنے پر زور دیتے ہوئے مسٹر سیتا رام یچوری نے کہا کہ سرحد پر پائیدار امن اورایک بہتر مستقبل کو یقینی بنانے کیلئے دونوں ممالک کو فی الفور مذاکرات کا احیاء کردینا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ جنگجویانہ وطن پرستی بھڑکانے سے سرحد پار دونوں طرف کی بنیاد پرست طاقتیں مستحکم ہوں گی جوکہ دونوں ممالک کے عوام کے مفادات کیلئے نقصاندہ اور جموں و کشمیر میں سنگین مضمرات ہوں گے ۔ واضح رہے کہ پاکستان نے 22 اگست کی شب این ایس اے سطح کے مذاکرات سیدستبرداری اختیار کرلی تھی اور کہا تھا کہ ہندوستان کی پیشگی شرائط پر بات چیت منعقد کی گئی تو کوئی مقصد حاصل نہیں ہوگا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT