Friday , July 21 2017
Home / جرائم و حادثات / جنگلی جانوروں کی ہلاکت اور اعضاء کی فروخت کرنے والی ٹولی بے نقاب

جنگلی جانوروں کی ہلاکت اور اعضاء کی فروخت کرنے والی ٹولی بے نقاب

شکاری ، بیوپاریوں اور درمیانی آدمی شامل ، رچہ کنڈہ پولیس کی کارروائی
حیدرآباد /11 جولائی ( سیاست نیوز ) رچہ کنڈہ پولیس جنگلی جانوروں کو ہلاک کرنے اور غیر قانونی طور پر ان کے اعضاء کو فروخت کرنے والی ٹولی کو بے نقاب کردیا ۔ پولیس نے اس سلسلہ میں 17 افراد کو گرفتار کرلیا جن میں شکاری بیوپاری اور درمیانی افراد شامل ہیں ۔ پولیس نے ان کے قبضہ سے چیتا کی چمڑی کو بھی ضبط کرلیا ۔ کمشنر پولیس راچہ کنڈہ مسٹر مہیش ملی دھر بھگوت نے پریس کانفرنس کے دوران ضبط شدہ چمڑے اور خاطی افراد کو پیش کیا ۔ کمشنر نے بتایا کہ یہ لوگ برسائی پیٹ اور اوٹنور کے جنگلاتی علاقوں میں شکار کرتے ہوئے جنگلی جانوروں کو ہلاک کرتے ہیں اور ان کے اعضاء کو فروخت کرتے ہیں ۔ 6 جولائی کے دن اس ٹولی کے ارکان راجا نرسو ، مجاہد ، راج شیکھر ، ذاکر ، خواجہ پاشاہ اور این راجو نے زین الدین کو اطلاع دی تھی کہ چیتا کی چمڑی مکرو ، مانک راؤ اور لمباراؤ سے حاصل کرے اور یہ لوگ بذریعہ کار رائے گھٹکیسر کے علاقہ سے گذر رہے تھے کہ اسپیشل آپریشن ٹیم نے گھٹکیسر پولیس کے ساتھ مشترکہ کارروائی میں انہیں حراست میں لے لیا اور پوچھ گچھ کے بعد پولیس نے سارے واقعہ کی حقیقت کا انکشاف کیا اور اس معاملہ میں ملوث مزید افراد کو گرفتار کرلیا ۔ کمشنر نے بتایا کہ اس ٹولی کا اصل سرغنہ 21 سال کے انیل 19 سالہ کے سرینواس 30 سالہ اے جوتی 50 سالہ کے جنگا 36 سالہ کے جائتو 36 سالہ ایم مانک راؤ 36 سالہ ایم لمبا 40 سالہ اے سدرشن 38 سالہ ایٹیالہ روی 60 سالہ شخص اے راج نرسو 25 سالہ محمد مجاہد عرف مجو 20 سالہ راج شیکھر 40 سالہ خواجہ پاشاہ ، 34 سالہ محمد ذاکر اور 30 سالہ این راجو کو گرفتار کرتے ہوئے پولیس نے عدالتی تحویل میں دے دیا ۔ گرفتار افراد کا تعلق اسلام پور ویلیج کیڈم منڈل نرمل ڈسٹرکٹ و دیگر علاقوں سے بتایا گیا ہے ۔ یہ لوگ ادم پور اور براسیٹ اور کیڈم و اٹنور کے علاقہ کے جنگلات سے شکار کرتے تھے ۔ اس موقع پر دیگر اعلی پولیس عہدیدار موجود تھے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT