Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / جنگ بندی کی خلاف ورزیوں پر پاکستان ہائی کمشنر کی طلبی

جنگ بندی کی خلاف ورزیوں پر پاکستان ہائی کمشنر کی طلبی

ہندوستان نے شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے احتجاج درج کرایا ، شلباری اور فائرنگ میں خاتون ہلاک

نئی دہلی / ابوظہی/ جموں۔ 16 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے آج پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط کو طلب کیا اور پاکستانی فوج کی لائین آف کنٹرول پر بلااشتعال فائرنگ و شہری آبادی کو نشانہ بنانے پر سخت برہمی ظاہر کرتے ہوئے احتجاج درج کرلیا ۔ گزشتہ دو دن میں لائین آف کنٹرول پر شلباری کے نتیجہ میں 6 افراد ہلاک ہوئے ہیں ۔ عبدالباسط سے دو ٹوک انداز میں کہا گیا ہے کہ حکومت پاکستان کو فائرنگ کا یہ سلسلہ روکنے کیلئے ضروری اقدامات کرنے ہوں گے ۔ اس بات کو بھی یقینی بنانا ہوگا کہ بین الاقوامی سرحد اور لائین آف کنٹرول پر امن و استحکام برقرار رہے ۔ وزارت امور خارجہ کے ترجمان وکاس سروپ نے ابوظہبی میں کہا کہ سکریٹری (ایسٹ) انیل ودوا نے پاکستانی ہائی کمشنر سے احتجاج درج کرایا اور ہماری برہمی سے واقف کروایا ہے ۔ پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط نے بھی تاہم سخت موقف اختیار کرتے ہوئے ہندوستان پر ماہ جولائی اور اگست کے دوران 70 مرتبہ جنگ بندی کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا ۔ عبدالباسط نے جو تقریباً 15 منٹ تک ساؤتھ بلاک میں موجود تھے کہا کہ ہمیں جنگ بندی کی خلاف ورزیوں پر تشویش ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ ایک ایسا موثر میکانزم تیار کیا جائے جس میں یہ پتہ چل سکے کہ بلااشتعال فائرنگ میں کون ملوث ہے ۔ وادی کشمیر میں گزشتہ دو دن کے دوران 6 افراد ہلاک ہوئے ۔ یوم آزادی پر ہوئی فائرنگ میں 5 عام شہری بشمول ایک سرپنچ ہلاک ہوگئے تھے جبکہ آج پاکستانی فوج کی جانب سے ہندوستان کی کئی چوکیوں اور شہری علاقوں پر کی گئی شلباری ، مارٹر بم حملوں اور شدید فائرنگ میں ایک خاتون ہلاک ہوگئی۔ کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد نے شہریوں کی ہلاکت کی مذمت کرتے ہوئے پاکستان کی فوجی کارروائی کو غیراسلامی قرار دیا۔ ہندوستانی فوج نے بھی جوابی کارروائی کی اور دونوں جانب شدید فائرنگ کا تبادلہ عمل میں آیا۔

آج پاکستان کی جانب سے کی جارہی جنگ بندی کی مسلسل خلاف ورزیوں کا 8 واں روز ہے۔ 9 اگست سے یہاں ضلع پونچھ میں ایل او سی سے متصل علاقوں سے فائرنگ اور شلباری مارٹر حملے ہورہے ہیں۔ ڈیفنس کے ترجمان لیفٹننٹ کرنل منیش مہتا نے کہا کہ پاکستانی فوج بھاری شلباری کے ساتھ شدید فائرنگ بھی کررہی ہے۔ پونچھ اور بالا کوٹ سیکٹرس میں آج صبح سے دور دراز والی ہندوستانی چوکیوں اور شہری علاقوں میں شلباری کی گئی۔ بالاکو نے سیکٹر میں بہروٹ موضع کی ایک خاتون نصرت بی ہلاک ہوئی ہے۔ یہاں پر 82 ایم ایم کے مارٹرس داغے گئے اور بھاری شلباری کی گئی۔ اس خاتون کی موت کے ساتھ ہی مرنے والوں کی تعداد 6 ہوگئی ہے اور دیگر 5 افراد زخمی ہوے ہیں۔ ہمیرپور، سوجہان، منڈی سیکٹرس میں پونچھ کے ایل او سی سے متصل علاقوں پر شدید فائرنگ جاری ہے۔
ڈپٹی کمشنر پونچھ نثار احمد نے کہا کہ ہم ان علاقوں کا دورہ کررہے ہیں اور یہ دیکھ رہے ہیں کہ یہاں سے عوام کا کس طرح تخلیہ کروایا جائے اور شلباری سے انہیں محفوظ رکھا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اس علاقہ میں شدید شلباری ہورہی ہے۔ اگست 2003ء میں جنگ بندی کے معاہدہ کے بعد سے کل تک جنگ بندی کی 35 خلاف ورزیاں کی گئی ہیں۔ کل یوم آزادی کے موقع پر بھی ایک سرپنچ کے بشمول پانچ شہری ہلاک ہوئے تھے۔ ہندوستان نے پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط کو طلب کرکے اپنا شدید احتجاج درج کروایا ہے۔ ذرائع کے مطابق عبدالباسط کو وزارت خارجہ کے سیکریٹری ایسٹ انیل وادھوا نے طلب کرکے اس مسئلہ پر بات کی اور احتجاج درج کروایا۔ کانگریس لیڈر راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد نے پاکستان کی اس حرکت کی شدید مذمت کی اور اسے غیراسلامی قرار دیا ۔ بزدلانہ حرکت کی علامت ہے۔ پاکستان کو اپنی بزدلانہ حرکت پر شرم محسوس کرنی چاہئے۔ غلام نبی آزاد نے جی اایم سی دواخانہ کا دورہ کیا جہاں پاکستانی شلباری میں زخمی زیرعلاج ہیں۔

TOPPOPULARRECENT