Friday , October 20 2017
Home / ہندوستان / جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے طلبہ کا وزارت برائے فروغ انسانی وسائل کے روبرو احتجاج

جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے طلبہ کا وزارت برائے فروغ انسانی وسائل کے روبرو احتجاج

نئی دہلی ۔ 23 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) حیدرآباد یونیورسٹی کے اسکالر روہت ویمولہ کی خودکشی پر اپنے احتجاج میں شدت پیدا کرتے ہوئے جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے طلبہ نے آج مرکزی وزارت برائے فروغ انسانی وسائل کے دفتر کے روبرو احتجاجی مظاہرہ کیا اور وائس چانسلر اپاراؤ کی علحدگی، یونیورسٹی کے احاطہ سے پولیس کے تخلیہ کا مطالبہ کیا۔ طلبہ کو پولیس نے اس وقت روک دیا جبکہ وہ وزارت کی جانب پیشرفت کرنے کی کوشش کررہے تھے۔ وہ تین مطالبے کررہے تھے۔ پانچ رکنی وفد نائب صدر یونین شہلا راشد شوریٰ کی زیرقیادت معتمد فروغ انسانی وسائل وی ایس اوبرائے سے ملاقات کرکے اس سلسلہ میں یادداشت پیش کرنے میں کامیاب رہا۔ شہلا نے بعدازاں پریس کانفرنس میں کہا کہ ہمارے بڑے مطالبات میں پولیس کی حیدرآباد یونیورسٹی کے احاطہ سے تخلیہ وائس چانسلر کی برطرفی اور طلبہ کے خلاف جھوٹے الزامات سے غیرمشروط دستبرداری شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اعلیٰ عہدیداروں نے کہا کہ وہ وائس چانسلر کی علحدگی کے بارے میں کچھ بھی نہیں کرسکتے کیونکہ یہ ان کے اختیار میں نہیں ہے۔ انہوں نے کہاکہ پولیس کی موجودگی میں ان کی مداخلت بھی ناممکن ہے۔عہدیداروں نے یونیورسٹی کے احاطہ میں بیرونی افراد بشمول سیاسی قائدین اور ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کے داخلہ پر پابندی عائد کردی ہے۔

TOPPOPULARRECENT