Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / جڑی بوٹیوں سے کینسر، ایڈز اور دیگر مہلک امراض کا علاج

جڑی بوٹیوں سے کینسر، ایڈز اور دیگر مہلک امراض کا علاج

مہاراشٹرا کے ضلع امراوتی کے شری رما کانت جی کا دعویٰ، گردے فیل ہونے سے متاثرہ افراد کو بھی راحت
حیدرآباد 24 جولائی (نمائندہ خصوصی) بیماریوں اور غربت کا کوئی مذہب نہیں ہوتا۔ ہر مذہب امن و محبت کی تعلیم دیتا ہے۔ تمام مذاہب کے ماننے والے بیماروں، غریبوں اور ضرورت مندوں کی مدد کے لئے بڑی تیزی سے آگے بڑھتے ہیں اور ہندوستان ساری دنیا میں مختلف مذاہب کے ماننے والوں، مختلف زبانوں کے بولنے والوں کی آماجگاہ ہے اور دنیا میں ہمارے ملک کی مثال کہیں اور نہیں مل سکتی۔ ان خیالات کا اظہار مہاراشٹرا کے امراوتی میں جڑی بوٹیوں کے ذریعہ کینسر، ایڈز اور گردوں کے مہلک امراض میں مبتلا مریضوں کا علاج کرنے والے شری شری رما کانت جی شہبروٹپٹنے نے کیا۔ انھوں نے سیاست کے فوٹو جرنلسٹ سید مظہر علی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ان کے پاس ہندوستان کے طول و عرض سے کینسر ایڈز گردوں کے فیل ہوجانے اور دیگر لاعلاج امراض میں مبتلا مایوس مریض آتے ہیں اور اوپر والے کے کرم سے وہ صحت مند بھی ہوجاتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں شری رما کانت جی شیروپٹنے نے مزید بتایا کہ ماضی میں وہ محکمہ جنگلات میں ملازمت کیا کرتے تھے اور ان کی ذمہ داری میں جانوروں کی دیکھ بھال شامل تھی۔ ساتھ ہی وہ جڑی بوٹیوں میں بہت زیادہ دلچسپی لیا کرتے تھے۔ نتیجہ میں انھیں کئی ایسے بے شمار جڑی بوٹیوں کا علم ہوا جس سے لاعلاج مرض کا علاج کیا جاسکتا ہے۔ ان کے پاس اکثر مختلف قسم کے کینسر اور ایچ آئی وی ایڈز سے متاثرہ مرد و خواتین کے علاوہ ایسے افراد رجوع ہوتے ہیں جن کے گردے فیل ہوچکے ہوں۔ ان جڑی بوٹیوں کے استعمال کے ساتھ ہی اگر ان مریضوں کو 20 فیصد بھی افاقہ ہوجائے تو مسلسل چار تا 6 ماہ دوا کھلائی جاتی ہے جس کے نتیجہ میں وہ صحت مند ہوجاتے ہیں۔ فوٹو جرنلسٹ سید مظہر علی کو شری رما کانت جی نے یہ بھی بتایا کہ حیدرآباد سے بھی مریض ان سے رجوع ہوکر صحتیاب ہوچکے ہیں۔ شری رما کانت جی کے مطابق تمام مذاہب کی مقدس کتابیں انسانیت کا درس دیتی ہیں۔ قرآن مجید کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ اس مقدس کتاب کو دیکھنے سے بھی لوگ صحت مند ہوجاتے ہیں۔ جب بھی قرآن پاک پر ان کی نظر پڑتی ہے تو انھیں ایسا محسوس ہوتا ہے کہ وہ تاریکی میں بھی دیکھ رہے ہوں۔ انھوں نے جڑی بوٹیوں کے تحفظ پر زور دیتے ہوئے کہاکہ ہندوستان میں ایسی بے شمار جڑی بوٹیاں ہیں جن کے ذریعہ بے شمار لاعلاج امراض کا علاج کیا جاسکتا ہے لیکن اس کے لئے تحقیق کی ضرورت ہے۔ ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ 20 یا 30 برسوں سے وہ خدمت خلق میں مصروف ہیں چاہے لوگ کسی خطرناک سے خطرناک مرض میں مبتلا ہوں۔ ان کے پیٹ میں دوا پہنچ جائے تو وہ صحتیاب ہونے لگتے ہیں۔ جڑی بوٹیوں سے جو دوائیں تیار کی جاتی ہیں، ان کی خوبی یہ ہوتی ہے کہ ان کے ذیلی اثرات نہیں ہوتے۔ انھوں نے یہ بھی بتایا کہ سات پلاکے جنگل میل گھاٹ کے جنگل میں طبی افادیت کی حامل جڑی بوٹیوں کی کثرت ہے۔ اس علاقہ کا ماحول اس قدر پُرفضاء ہے کہ مریضوں کے لئے یہ نعمت غیر مترقبہ ہے۔ محکمہ جنگلات میں 1979 ء تا 2000 ء خدمات انجام دے چکے شری رما کانت جی شیرپنٹے کے مطابق ان کے والد وید راج ایک کالج کے پرنسپل تھے اور ان کی طرح خاندان کے دیگر افراد کو بھی جڑی بوٹیوں سے کافی دلچسپی ہے۔ بہرحال انھوں نے بات چیت کے آخر میں یہی کہاکہ انسان کو صحت مند رہنے کے لئے صحتمند عادتیں اختیار کرنی چاہئے۔ شری رما کانت جی شیروپٹنے سے اس پتہ اور فون نمبر پر ربط پیدا کیا جاسکتا ہے۔ Shri Ramakantji Sherupatne ، Luxmi Bai Park ، Somawar Main Road، Chikaldara ، Zila Amrawati ، Maharashtra ، Ph.No:09422821296 ، 09421739603

TOPPOPULARRECENT