Wednesday , August 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / جگموہن ڈالمیا کے انتقال کے بعد بی سی سی آئی کیلئے حالات مشکل

جگموہن ڈالمیا کے انتقال کے بعد بی سی سی آئی کیلئے حالات مشکل

ممبئی ، 21 سپٹمبر (سیاست ڈاٹ کام) ایک طرف انڈین کرکٹ اپنی باگ ڈور کو سنبھالنے والے سب سے حرکیاتی اڈمنسٹریٹر سے محرومی کا سوگ منارہی ہے، دوسری طرف 75 سالہ علیل ڈالمیا کے انتقال نے بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ اِن انڈیا (بی سی سی آئی) کی حرکیات کو ابہام کی حالت میں چھوڑ دیا ہے۔ عمدگی سے دیکھیں تو صدر کی خالی نشست کے بارے میں ’آگے کیا ہوتا ہے؟‘ والے سوال کا حل بہت سیدھا سا رہے گا۔ بورڈ کے دستور کے مطابق بی سی سی آئی کو 15 یوم کے وقت میں اسپیشل جنرل باڈی میٹنگ طلب کرنا ہوگا۔ اس میٹنگ کے دوران ایسٹ زون کا کوئی نمائندہ (آنجہانی ڈالمیا نے کرکٹ اسوسی ایشن آف بنگال کی نمائندگی کی) منتخب کیا جائے گا، یا تو بلامقابلہ یا پھر مقابلے کے ساتھ، جس کا انحصار امیدواروں کی تعداد پر رہے گا اور اس کے بعد وہ صدر بورڈ کی حیثیت سے جائزہ حاصل کرلے گا۔ ایسا ہی یقینا ہوجاتا اگر بی سی سی آئی کی اقتدار کی راہداریوں میں حالات اتنے صاف سیدھے اور پیچیدگیوں سے عاری ہوتے۔ شروعات سے دیکھیں تو یہ ضروری نہیں کہ صرف ایسٹ زون کے نمائندہ کو بی سی سی آئی کے اس اعلیٰ عہدہ کیلئے مسابقت کا موقع رہے گا۔ مشرق (بنگال، اوڈیشہ، تریپورہ، آسام، جھارکھنڈ اور نیشنل سی سی پر مشتمل) سے کوئی بھی اسٹیٹ اسوسی ایشن اپنے زون کے باہر سے امیدوار نامزد کرسکتی ہے۔ مثال کے طور پر اوڈیشہ کرکٹ اسوسی ایشن کی طرف سے صدر کیلئے راجیو شکلا کی نامزدگی ہوسکتی ہے یا تریپورہ کرکٹ اسوسی ایشن کسی ویسٹ زون والے کو منتخب کرسکتی ہے۔ ایسی صورت میں صدر کے عہدہ کا فیصلہ ووٹوں کی اساس پر ہوگا۔ ابھی سب کچھ ختم نہیں ہوا۔ یہ معاملہ تذبذب والا ہے جو صرف پیچیدگیاں ہی لاتا ہے۔ اور کئی فریق سامنے آئیں گے جو بورڈ پر کسی نہ کسی طرح کنٹرول حاصل کرنا چاہیں گے۔ علاوہ ازیں یہ ابھی واضح نہیں کہ آیا بی سی سی آئی اسپیشل جنرل باڈی میٹنگ منعقد بھی کرسکتا ہے یا نہیں، کیونکہ اندرون ایک ماہ قبل بورڈ نے سپریم کورٹ سے رجوع ہوکر وضاحت طلب کی تھی کہ آیا اس کے سابق صدر این سرینواسن میٹنگ میں شرکت کرسکتے ہیں۔ بورڈ نے اپنی ورکنگ کمیٹی میٹنگ 28 اگسٹ کو منسوخ کردی تھی، جس میں معطل آئی پی ایل فرنچائزیس چینائی سوپر کنگس اور راجستھان رائلز کی قسمت پر غوروخوض کیا جانا تھا۔ جب سرینواسن نے اس میٹنگ میں ٹاملناڈو کرکٹ اسوسی ایشن (ٹی این سی اے) کے نمائندہ کی حیثیت سے شرکت کیلئے اصرار کیا تو یہ میٹنگ ہی منسوخ کردی گئی تھی۔ ایک ایسے روز جبکہ انھوں نے اس شخص کو الوداع کہا جس نے بی سی سی آئی کو عالمی نقشہ پر پہنچایا، اب یہ دیکھنا باقی ہے کہ کس طرح بورڈ اس غیرمعمولی غیریقینی کیفیت پر قابو پانے میں کامیاب ہوتا ہے جو اُس کے دفاتر کو لپیٹ میں لے چکی ہے اور اب وہ نہیں رہے۔ اور انھیں یہ پتہ ہے کہ دنیا کی نظریں اِدھر لگی ہیں۔ بی سی سی آئی کیلئے آنے والے حالات ہرگز آسان نہیں رہیں گے۔

آئی سی سی ، مرکزی وزیر جیٹلی، ہندوستانی کپتانوں و دیگر کا خراج
آنجہانی کی آخری رسومات مکمل ۔ ڈالمیا نے ہندوستان کو ’ہوم آف کرکٹ‘ بنایا : جیٹلی
دبئی ؍ کولکاتا ؍ نئی دہلی ، 21 سپٹمبر (سیاست ڈاٹ کام) آئی سی سی (انٹرنیشنل کرکٹ کونسل) نے اپنے سابق صدر جگموہن ڈالمیا کے اچانک انتقال پر دکھ کا اظہار کیا ہے۔ وہ 1997ء سے 2000ء تک صدر آئی سی سی کے عہدہ پر فائز رہے تھے۔ غمزدہ خاندان ، دوستوں اور بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ اِن انڈیا (بی سی سی آئی) کو تعزیتی پیام میں آئی سی سی چیرمین این سرینواسن نے کہا کہ ڈالمیا کو کرکٹ کیلئے اُن کے بیش قیمتی رول کیلئے طویل عرصہ یاد رکھا جائے گا۔ دریں اثناء اُن کے سابق حریفوں این سرینواسن اور شرد پوار سے لے کر بی سی سی آئی کی موجودہ بڑی شخصیتوں نے آج جگموہن ڈالمیا کو جذباتی انداز میں وداع کیا، جن کی مکمل سرکاری اعزاز اور توپوں کی سلامی کے ساتھ آخری رسومات انجام دی گئیں۔ قبل ازیں کولکاتا میں ڈالمیا کی میت آج کرکٹ اسوسی ایشن آف بنگال (سی اے بی) کو لائی گئی تاکہ عوام کو اس اعلیٰ منتظم کے آخری دیدار کا موقع دیا جاسکے۔ ڈالمیا کا آخری سفر اُن کی 10 علی پور قیامگاہ سے دوپہر 12.15 بجے شروع ہوا۔ انڈین کرکٹ ٹیم ڈائریکٹر روی شاستری اور بی سی سی آئی کی بڑی شخصیتیں بشمول سکریٹری انوراگ ٹھاکر اور سی اے او رتناکر شٹی آنجہانی اڈمنسٹریٹر کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے قطار میں کھڑے ہونے والوں میں شامل ہیں۔ اس دوران ڈالمیا کو گریٹ اڈمنسٹریٹر قرار دیتے ہوئے مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج نئی دہلی میں کہا کہ اُن کے انتقال سے ملک ایسی پرجوش شخصیت سے محروم ہوگیا جس نے ہندوستان کو ’ہوم آف کرکٹ‘ بنایا۔ ہندوستانی او ڈی آئی کیپٹن مہندر سنگھ دھونی اور ٹسٹ کیپٹن ویراٹ کوہلی نے بھی اظہار تعزیت کیا ہے۔ ڈالمیا کے پسماندگان میں اُن کی بیوہ چندرلیکھا، دختر ویشالی اور فرزند ابھیشک شامل ہیں۔ دھونی اور کوہلی نے ٹوئٹر کے ذریعے اپنے دکھ کا اظہار کیا ہے۔ دھونی نے کہا، ’’مسٹر ڈالمیا کیلئے کرکٹ میں اُن کے رول پر احترام پیش کرتا ہوں۔ اُن کی آتما کو شانتی ملے۔ اُن کے پسماندگان کو صبر اور طاقت حاصل ہو۔‘‘ کوہلی نے کہا، ’’ڈالمیا جی کے انتقال سے متعلق خبر سن کر دکھ ہوا۔ اُن کے خاندان اور دوست احباب کو دلی گہرائیوں سے تعزیت پیش کرتا ہوں‘‘۔

TOPPOPULARRECENT