Wednesday , July 26 2017
Home / Top Stories / جھارکھنڈ میں مسلم نوجوان کو درخت سے باندھ کر پیٹا گیا

جھارکھنڈ میں مسلم نوجوان کو درخت سے باندھ کر پیٹا گیا

محمد سالک دواخانہ میں زخموں سے جانبر نہ ہوسکا، تین گرفتار
گوملا ؍ جھارکھنڈ۔ 7 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) جھارکھنڈ کے ضلع گوملا میں دوسرے طبقہ سے تعلق رکھنے والی ایک لڑکی کے ساتھ دوستی کرنے پر ایک نوجوان کو مبینہ طور پر شدید مارا پیٹا گیا جس میں اس ہلاکت ہوگئی۔ پولیس نے تین افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔ سپرنٹنڈنٹ پولیس چندن کمار جھا نے کہا کہ ہم نے 19 سالہ محمد سالک کی ہلاکت کے سلسلہ میں جمعرات کو تین افراد کو حراست میں لیا ہے۔ ان تین افراد نے اس مسلم نوجوان کو درخت سے باندھ کر بیدردی سے زدوکوب کیا تھا جس کے بعد اس کی موت واقع ہوئی۔ یہ نوجوان دوسرے طبقہ سے تعلق رکھنے والی ایک لڑکی کے ساتھ دیکھا گیا تھا۔ عہدیدار نے بتایا کہ پولیس تحقیقات کے دوران لڑکی کی جانب سے فراہم کردہ معلومات کی بنیاد پر خاطیوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ لڑکی کے ارکان خاندان نے مسلم نوجوان سے دوستی کی مخالفت کی تھی اور اس نوجوان کو دھمکی دی گئی تھی کہ وہ بھی لڑکی سے دور رہے لیکن ایک دن 15 سالہ لڑکی کے ساتھ وہ جارہا تھا، مقامی افراد نے اسے دبوچ کر درخت سے باندھ دیا اور زدوکوب کیا۔ رات دیر گئے تک گھر واپس نہ ہونے پر محمد سالک کے ارکان خاندان پریشان ہوگئے اور اسے تلاش کرنے لگے۔ شدید زخمی حالت میں درخت سے بندھا ہوا دیکھ کر اسے فوری دواخانہ منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں سے جانبر نہ ہوسکا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT