Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / جھارکھنڈ کے مندر میں بھگدڑ‘ 11افراد ہلاک

جھارکھنڈ کے مندر میں بھگدڑ‘ 11افراد ہلاک

30 زخمی‘وزیراعظم ‘ چیف منسٹر وصدر کانگریس کا اظہار رنج‘ ورثاو زخمیوں کو معاوضہ کااعلان
دیوگڑھ( جھارکھنڈ)۔10اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) ضلع دیوگڑھ میں ایک مندر کے قریب جہاں ہزاروں بھکت صبح سے پہلے ہی سے خصوصی پوجا کیلئے قطار میں کھڑے تھے ‘ تاکہ مبارک ماہ شرون کے دوران خصوصی پوجا کرسکے ‘ بھگدر مچ گئی جس سے کم از کم 11افراد بشمول ایک خاتون ہلاک اور 30سے زیادہ زخمی ہوگئے ۔ ڈی سی پی دیوگڑھ امیت کمار نے کہا کہ 10مرد اور ایک خاتون بھگدڑ میں ہلاک ہوگئے کیونکہ بھکت صبح 4بجے کے قریب قطار توڑ کر اندر داخل ہونا چاہتے تھے ۔یہ واقعہ بیلابگان کے بیدیہ ناتھ مندر کے قریب پیش آیا جو ریاستی دارالحکومت رانچی سے تقریباً 350کلومیٹر دور ہے ۔ تمام زخمیوں کا علاج قریبی ہسپتال میں کیا جارہا ہے ۔ سیول سرجن دیواکر کامت نے اس کی اطلاع دی ۔ آج مبارک ماہ شرون کا دوسرا پیر ہے جب کہ دیوگڑھ میں عام طور پر لاکھوں بھکتوں کا ہجوم مندروں میں ہوتا ہے ۔ لارڈ شیوا کے بھکت اس موقع پر مندروں میں خصوصی پوجا کرتے ہیں ۔ وزیراعظم نریندر مودی اور چیف منسٹر رگھوبرداس نے اظہار رنج و غم کیا ہے ۔ کیونکہ کئی انسانی جانیں ضائع ہوگئی ہیں ۔ وزیراعظم نے اپنے مکتوب تعزیت میں کہا کہ انہیں جھارکھنڈ میں بھگدڑ کی وجہ سے انسانی جانیں ضائع ہونے پر گہرا رنج پہنچا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اُن کے افکار اور دعائیں سوگوار ارکان خاندان کے ساتھ ہیں ۔ مودی نے  رگھوبر داس سے بھی بات چیت کی اور چیف منسٹر نے وزیراعظم کو واقعہ کی تفصیلات سے واقف کروایا ۔ رگھوبر داس نے دو لاکھ روپئے مہلوکین کے ورثاء کو ادا کرنے کا اعلان کیا ۔ زخمیوں کو 50ہزار روپئے دیئے جائیں گے ۔ ایک اعلیٰ سطحی کمیٹی جس کی صدارت ریاستی معتمد داخلہ ایس این پانڈے کریں گے ‘ واقعہ کی تحقیقات کرے گی ۔ اسسٹنٹ ڈی جی پی ایس این پردھان اور دیگر عہدیدار راحت رسانی کارروائیوں کی نگرانی کررہے ہیں ۔ 4بجے صبح افواہ پھیل گئی کہ مندر کے دروازے کھول دیئے گئے ہیں ‘ انتظار کرنے والے چند بھکتوں نے قطار توڑ کر اندر داخل ہونے کی کوشش کی جس کی وجہ سے بھگدڑ مچ گئی ۔ مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے کہا کہ پولیس کی مزید جمعیت ہجوم پر قابو پانے کیلئے ریاست کو روانہ کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بھکتوں کا زبردست ہجوم ہے اور انہوں نے مزید جمعیت طلب کی ہے اس لئے معتمد داخلہ کو سیرع الحرکت فورس وہاں روانہ کرنے کی اطلاع دے دی گئی ہے ۔ بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ گڈا نشی کانت دوبے نے کہا کہ اقدامات کئے گئے ہیں تاکہ ایسے واقعات کا اعادہ نہ ہونے پائے ۔ مہلوکین میں شیوبھکت کنواریاں بھی شامل ہیں جو بھگوا رنگ کی لباس میں ملبوس تھیں اور پویتر پانی پیش کرنے کی رسم میں شرکت کرنا چاہتی تھی جو دریائے گنگا سے لایا گیا ہے جو مندر سے کافی فاصلہ پر واقعہ ہے ۔صدر کانگریس سونیا گاندھی نے بھی سوگوار خاندانوں سے اظہار تعزیت کیا ۔

TOPPOPULARRECENT