Wednesday , April 26 2017
Home / کھیل کی خبریں / جیسن محمد کی برق رفتار بیٹنگ‘ویسٹ انڈیز کی تاریخی کامیابی

جیسن محمد کی برق رفتار بیٹنگ‘ویسٹ انڈیز کی تاریخی کامیابی

راویڈنس۔8 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) بڑے اور اسٹار کھلاڑیوں سے محروم ویسٹ انڈیز نے پہلے ون ڈے میچ میں کیرن پاول اور جیسن محمد کی عمدہ بیٹنگ کی بدولت ریکارڈ 309 رنز کا ہدف حاصل کر کے پاکستان کو چار وکٹ سے شکست دے دی۔پراویڈنس میں کھیلے گئے سیریز کے پہلے  میچ میں پاکستان نے ویسٹ انڈیز کی دعوت پر بیٹنگ شروع کی تو ٹیم میں ایک عرصے بعد واپس آنے والے پاکستانی اوپنرز احمد شہزاد اور کامران اکمل نے ٹیم کو بہترین آغاز فراہم کیا۔80 ون ڈے میچوں کے وقفے کے بعد پاکستانی ٹیم میں جگہ بنانے والے کامران اکمل نے جارحانہ انداز میں اننگز شروع کی اور تین چھکوں اور پانچ چوکوں کی مدد سے 47 رنز بنائے۔احمد شہزاد کے ساتھ 85 رنز کا عمدہ آغاز فراہم کرنے کے بعد وہ حریف کپتان جیسن ہولڈر کی وکٹ بنے۔شہزاد  نے محمد حفیظ کے ساتھ 64 رنز کی ساجھے داری قائم کی اور 67 رنز بنانے کے بعد ایشلے نرس کی وکٹ بنے۔احمد شہزاد کے آؤٹ ہونے کے بعد پاکستانی ٹیم نے سست رفتاری سے بیٹنگ شروع اور رن ریٹ بتدریج گرتا گیا جس کی بنیادی وجہ محمد حفیظ کی حد سے زیادہ دفاعی بیٹنگ تھی۔اس دوران دوسرے سرے پر موجود بابر اعظم بھی تیزی سے رنز اسکور کرنے میں ناکام رہے اور بڑھتے دباؤ کے سبب بڑا شاٹ کھیلنے کی کوشش میں وکٹ گنوا بیٹھے۔ نصف سنچری کی تکمیل کے بعد حفیظ نے کھیل کا انداز بدلا اور قدرے جارحانہ انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے شعیب ملک کے ساتھ صرف 9.2 اوورز میں 89 رنز کی شراکت قائم کر کے پاکستان کے 300 سے زائد رنز کا مجموعہ بنانے کی راہ ہموار کی۔وہ 92 گیندوں پر تین چھکوں اور چھ چوکوں کی مدد سے 88 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوئے۔شعیب ملک ابتدا میں مشکل میں نظر آئے

لیکن پھر عمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے 53 رنز بنانے کے بعد پویلین لوٹے۔پاکستان نے مقررہ اوورز میں پانچ وکٹ کے نقصان پر 308 آٹھ رنز بنائے اور ویسٹ انڈیز کو میچ میں فتح کیلئے 309 رنز کا ہدف دیا۔میزبان ٹیم کی جانب سے ایشلے نرس سب سے کامیاب بولر رہے جنہوں نے 62 رنز کے عوض چار وکٹیں لیں۔جواب میں پاکستان کو چیڈوک والٹن کی صورت میں جلد ہی پہلی کامیابی مل گئی لیکن پھر ایون لوئس اور کیرن پاول نے اسکور کو 91 تک پہنچا کر اپنی ٹیم کی جیت کی بنیاد رکھی۔لوئس 47 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے تو کیرن پاول اور شے ہوپ نے 65 رنز کی ساجھے داری قائم کر کے مشکلات پیدا کرنے کی کوشش کی لیکن پھر دونوں کھلاڑی یکے بعد دیگرے 61 اور 24 رنز بنانے کے بعد آوٹ ہوئے۔جب چوتھی وکٹ گری تو ویسٹ انڈیز کو 98 گیندوں پر جیت کیلئے 150 سے زائد رنز درکار تھے اور اس کی چار ابتدائی وکٹیں گر چکی تھیں اور اس کو دیکھتے ہوئے میچ میں پاکستان کی کامیابی کے امکانات روشن نظر آرہے تھے لیکن جیسن محمد نے پاکستان کی امیدوں پر پانی پھیر دیا۔انہوں نے پہلے 14 رنز بنانے والے جوناتھن کارٹر کے ساتھ 80 رنز کی قیمیتی شراکت قائم کی اور پھر ایشلے نرس کے ساتھ 4.3 اوورز میں 50 رنز جوڑ کر پاکستان سے یقینی کامیابی چھیننے کے ساتھ ساتھ ویسٹ انڈیز کو سیریز میں برتری بھی دلا دی۔محمد نے 58 گیندوں پر تین چھکوں اور 11 چوکوں کی مدد سے ناقابل شکست 91 رنز کی اننگز کھیلی جبکہ نرس نے 15 گیندوں پر 34 رنز بنائے۔یہ کرکٹ کی تاریخ میں پہلا موقع ہے کہ ویسٹ انڈیز نے 300 سے زائد رنز کے ہدف کا کامیابی سے تعاقب کیا ہے۔جیسن محمد کو ان کی شاندار بیٹنگ پر میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT