Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر پاکستان میں ہنوز گرفتار نہیں

جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر پاکستان میں ہنوز گرفتار نہیں

معمولی کارکنوں کی غیرمتعلق الزامات میں گرفتاری، مسعود اظہر گھر پر بھی نظربند نہیں
نئی دہلی ۔ 18 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) مولانا مسعود اظہر پاکستان کے دہشت گرد گروپ جیش محمد کے سربراہ کو ہنوز گرفتار نہیں کیا گیا اور نہ انہیں گھر پر نظربند رکھا گیا ہے جبکہ ان کے تین جونیر کارکن مختلف مقدمات میں جن کا تعلق پٹھان کوٹ دہشت گرد حملہ سے نہیں ہے، گرفتار کئے گئے ہیں۔ محکمہ سراغ رسانی کی اطلاعات کے بموجب مسعود اظہر کے خلاف کوئی مقدمہ پٹھان کوٹ دہشت گرد حملہ کے سلسلہ میں درج نہیں کیا گیا ہے اور نہ ان کے خلاف یا ان کے دہشت گرد گروپ کے خلاف جو ہندوستان میں کئی حملوں کا ذمہ دار ہے، کوئی کارروائی ہوتی نظر آرہی ہے۔ جیش محمد کے جونیر کارکنوں کو پاکستانی صیانتی محکموں نے حراست میں لے لیا ہے لیکن انہیں صرف حراست میں رکھا گیا ہے۔ ایسی دستاویزات جن کا تعلق پٹھان کوٹ حملہ سے ہے، ان کے پاس سے ضبط نہیں کی گئیں۔ ابتدائی اطلاعات کے بموجب مولانا مسعود اظہر کو پٹھان کوٹ واقعہ کے سلسلہ میں گرفتار کیا گیا تھا۔ تاہم یہ اطلاعات مکمل طور پر غلط ثابت ہوئیں۔ پاکستان نے ہندوستان کو اطلاع دی تھی کہ جیش محمد کے خلاف فوجداری مقدمہ درج کیا گیا ہے لیکن کوئی بھی مقدمہ پٹھان کوٹ حملہ سے مربوط نہیں ہے۔ عہدیداروں کے بموجب پاکستان نے اعلان کیا ہیکہ جیش محمد کے کئی ارکان کو گرفتار کیا گیا ہے لیکن یہ انکشاف نہیں کیا گیا کہ ان کی گرفتاری کے بعد ان کے خلاف تحقیقات کا بھی آغاز کیا گیا ہے یا نہیں۔ ہندوستان نے پاکستان کو کئی معلومات فراہم کی تھیں ۔ موبائیل نمبرس دیئے تھے جو دہشت گرد کے آقاؤں نے استعمال کئے تھے لیکن ٹیلیفون کے مالکین کے بارے میں ہنوز کوئی اطلاع نہیں دی گئی۔ دہشت گردوں اور ان کے پاکستانی آقاؤں کی بات چیت بھی ریکارڈ کی گئی تھی اور پاکستان کے حوالے کردی گئی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT