Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / جیلر ، مجھے خودکشی کیلئے مجبور کررہا ہے : ابو سالم

جیلر ، مجھے خودکشی کیلئے مجبور کررہا ہے : ابو سالم

ممبئی۔ 16 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ممبئی دھماکوں کے سلسلے میں یعقوب میمن کو پھانسی دیئے جانے کے بعد اس کیس سے وابستہ ایک اور ملزم ابو سالم انصاری نے جیل سپرنٹنڈنٹ ہیرا لال جادھو پر الزام عائد کیا کہ وہ مجھ پر ذہنی دباؤ ڈال کر خودکشی کرنے کیلئے مجبور کررہے ہیں۔ 1993ء کے ممبئی سلسلہ وار دھماکوں میں ابو سالم کو محروس رکھا گیا ہے۔ جیلر کی جانب سے خودکشی کے لئے اُکسانے کے الزام کے بعد ابو سالم نے عدالت میں حلف نامہ داخل کیا ہے۔ انسداد دہشت گردی کی خصوصی ٹاڈا عدالت میں یہ حلف نامہ داخل کئے جانے کے بعد جیل کے اندر ہونے والی زیادتیوں کا ذکر کیا گیا ہے۔

ابو سالم کو ممبئی سے ملحقہ تلوجا سنٹرل جیل میں محروس رکھا گیا ہے۔ واضح رہے کہ دو سال قبل اسی جیل میں ابوسالم پر حملہ کیا گیا تھا اور گولی لگنے سے وہ زخمی ہوگیا تھا۔ اس کے وکیل صباء قریشی نے بتایا کہ جیل حکام نے 15 جولائی کو ٹاڈا عدالت میں ابوسالم کے خلاف ڈسپلن شکنی کی شکایت درج کروائی تھی۔ اس کے جواب میں یہ حلف نامہ داخل کیا گیا ہے۔ جیل سپرنٹنڈنٹ کی حیثیت سے جادھو نے جب سے جائزہ لیا ہے، ابو سالم پر زیادتی کی جارہی ہے اور ذہنی دباؤ ڈالا جارہا ہے۔ جیل میں ابو سالم پر 24 گھنٹے نظر رکھی جارہی ہے۔ ان کے ساتھ سخت رویہ اختیار کیا گیا ہے۔ حلف نامہ میں ابو سالم نے ٹاڈا عدالت سے شکایت کی ہے کہ جیل سپرنٹنڈنٹ نے اس کو دھمکی دی ہے کہ اس کے ساتھ ایسا سلوک کیا جائے گا کہ وہ مجبور ہوکر خودکشی کرلے گا۔ جیل سپرنٹنڈنٹ نے یہ بھی کہا ہے کہ تو کاغذی ڈان ہے مگر میں اصل ڈان ہوں۔ تیرا وہ حال کروں گا کہ تو پاگل ہوجائے گا اور پریشان ہوکر جان دے دے گا۔ یعقوب میمن کو پھانسی دیئے جانے کے بعد جیلوں میں مسلم قیدیوں کے ساتھ جیلروں اور دیگر جیل عملہ کا رویہ شدت پسندانہ ہوتا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT