Friday , September 22 2017
Home / جرائم و حادثات / جیلر کی ہراسانی کا شکار قیدی کی اقدام خود کشی ، تشویشناک حالت

جیلر کی ہراسانی کا شکار قیدی کی اقدام خود کشی ، تشویشناک حالت

افراد خاندان سے ملاقات کی عدم اجازت ، انسانی حقوق کمیشن سے شکایت
حیدرآباد ۔ /24 اگست (سیاست نیوز) چنچل گوڑہ جیل میں جیلر راج شیکھر راؤ کی مبینہ ہراسانی کا شکار اقدام خودکشی کرنے والے قیدی کاظم علی کی حالت مزید تشویشناک ہوگئی ہے ؟ اور جیل میں پی ڈی ایکٹ کا سامنا کررہے اس قیدی کے ساتھ اذیت رسانی کا سلسلہ جاری ہے اور انتہائی حد یہ ہوگئی ہے کہ اب کاظم کو اس کے افراد خاندان سے ملاقات کا موقع بھی نہیں دیا جارہا ہے ، یہ بات خود کاظم کے رشتہ دار نے بتائی ۔ کاظم کا خاندان اس کی صحت و سلامتی پر فکر مند ہوگیا ہے ۔ کاظم کے بھائی ہاشم علی آصف علی اور فاطمہ نے مسئلہ کو انسانی حقوق کمیشن سے رجوع کردیا ہے اور حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ان کے بھائی کی سلامتی کو یقینی بناتے ہوئے جیلر راج شیکھر سے اس کی جان کو آزاد کروائیں ۔ انہوں نے جیلر پر سنگین الزامات لگاتے ہوئے کہا کہ وہ کاظم سے نہ جانے کس بات کا بدلہ لے رہا ہے ۔ اپنے بھائی کے مجرم ہونے اور اس کی مجرمانہ سرگرمیوں کو ایک طرف تسلیم کرتے ہوئے دوسری طرف سازشوں کے تحت ان کے بھائی کے خلاف کارروائی کی بات بتاتے ہوئے انہوں نے سوال کیا کہ کیا اب قید میں بھی انسانی حقوق کو ختم کیا جائے گا ۔ کاظم علی کے رشتہ داروں نے بتایا کہ کاظم نے /7 اگست کو اسکریو کھاکر خودکشی کا اقدام کیا تھا جس کو علاج کے بعد /17 اگست کے دن دوبارہ چنچل گوڑہ جیل منتقل کیا گیا ۔ افراد خاندان کاظم سے ملاقات کے لئے جیل گئے تھے ۔ تاہم خواتین کی پرواہ کئے بغیر بدسلوکی کرتے ہوئے انہیں جیل سے ملاقات کے بغیر رسواء کرتے ہوئے روانہ کردیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ جیل انتظامیہ اور ملاقات کا موقع فراہم کرنے والے عملہ نے انہیں بتایا کہ اب کاظم سے ایک ماہ تک ملاقات نہیں کی جاسکتی چونکہ اس کو جیل میں بھی سزا دی جارہی ہے ۔ ایک ماہ تک اس کی ملاقاتوں پر پابندی عائد کردی گئی ہے ۔ اس بات سے پریشان افراد خاندان کو اب اپنے بھائی کی صحت و سلامتی کی فکر ستارہی ہے ۔ اور ان کا الزام ہے کہ کاظم کے ساتھ جیل میں ہراسانی کا سلسلہ روکا نہیں ، سونچی سمجھی سازش اور منصوبہ بند طریقہ سے راج شیکھر ہراساں و پریشان کررہا ہے ۔ کاظم کے بھائی ہاشم علی نے جو گزشتہ روز ملاقات کے لئے گئے تھے ان کے مطابق جب کاظم ان سے ملاقات کے لئے آیا ۔ جیل عملہ کے بازوں کی مدد سے وہ ملاقات کے مقام تک پہونچا تھا ۔ اور اس نے اپنے آپ کو ختم کرنے کی دھمکی دی ہے چونکہ وہ ہراسانی سے اس قدر تنگ آچکا ہے کہ اب وہ روز نہیں ایک وقت مرنا چاہتا ہے ۔ جیل حکام پر اس طرح کے سنگین اور انسانیت سوز الزامات کی توثیق کیلئے رابطہ قائم کیا گیا تو ان سے رابطہ قائم نہ ہوسکا ۔ ٹولی چوکی علاقہ کے ساکن کاظم علی کے افراد خاندان نے حکومت ریاستی وزیر داخلہ اور پولیس کے اعلیٰ عہدیداروں سے مطالبہ کیا کہ وہ اس واقعہ کی تحقیقات کرواتے ہوئے خاطی عہدیدار کے خلاف سخت کارروائی کرے اور کاظم کی سلامتی کو یقینی بنائیں ۔ ان کا خوف ہے کہ کاظم کو جیل میں مارکر اسے خودکشی بھی قرار دیا جاسکتا ہے ۔ لہذا حکومت سے مطالبہ ہے کہ وہ اقدامات کرے اور جیلوں میں انسانی حقوق کی پامالی کے الزامات کا جائزہ لے اور اس کے تدارک کے لئے موثر اقدامات کریں ۔

TOPPOPULARRECENT