Monday , September 25 2017
Home / دنیا / جیمس کومے پر غلط بیانی کا ڈونالڈٹرمپ کا الزام

جیمس کومے پر غلط بیانی کا ڈونالڈٹرمپ کا الزام

واشنگٹن، 11 جون (سیاست ڈاٹ کام)صدرامریکہ ڈونالڈ ٹرمپ نے خفیہ ایجنسی ایف بی آئی کے ڈائریکٹرکے عہدے سے ہٹائے گئے جیمز کومے کے بیانات کو سرے سے مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ سابق ڈائریکٹر سراسر جھوٹ بول رہے ہیں اور وہ خود کو پاک و صاف ثابت کرنے کے لئے کسی بھی تحقیقات کے لئے پوری طرح تیار ہیں۔اس دوران اٹارنی جنرل جیف سیشنس نے کہا ہے کہ وہ کومے کے بیان پر سینیٹ کی انٹیلی جنس کمیٹی کے سامنے جمعرات کو بات چیت کریں گے ۔ٹرمپ ایف بی آئی کے سابق ڈائریکٹر کی جانب سے امریکی سینیٹ کی انٹیلی جنس کمیٹی کے سامنے ان کے خلاف دیئے ہوئے بیانات کے بعد پہلی بار پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے ۔کومے نے الزام لگایا کہ صدر نے عہدہ سنبھالنے کے پہلے دن سے ہی ان پر دباؤ بنانا شروع کر دیا تھا اور ان کے معتمدخاص اور اس وقت کے قومی سلامتی کے مشیر مائیکل فلن کے خلاف روس سے رشتہ رکھنے کے لئے جاری تحقیقات کو بند کرنے کو کہا تھا۔ جیمس کومے نے ٹرمپ کے خلاف اپنے بیان میں کہا تھا کہ کبھی فون کال تو کبھی اجلاسوں میں صدر کا مطالبہ مسلسل جاری رہا کہ روس سے متعلق تحقیقات کو بند کیا جائے ۔کومے نے کہا “اس معاملے کو لے کر میری تکلیف بڑھتی جا رہی تھی۔” جمعہ کو ہونے والی کانگریس کی سماعت کے دوران اس بیان کوکومے کا ابتدائی بیان سمجھاجا رہا تھا، لیکن انٹیلی جنس معاملات پر سینیٹ سلیکشن کمیٹی نے اسے ملاقات سے ایک دن پہلے ہی جاری کر دیا۔اس پرامریکی سیاست میں بھونچال آ گیا ہے ۔ امریکی سیاسی تجزیہ کاروں کے مطابق کومے کے بیانات کی جانچ ہو‘ جیسے جیسیپیشرفت ہو ٹرمپکے اقتدار سے بے دخل ہونے کے خطرہ میں بھی اسی رفتار سے اضافہ ہوگیا ہے سات صفحات پر مشتمل یہ تحریری بیان کومے کا ٹرمپ کے ساتھ رہنے کے دوران بات چیت کی تفصیلات ہے ۔ ٹرمپ انتظامیہ نے کومے کو مدت مکمل ہونے سے قبل ہی ایف بی آئی ڈائریکٹر کے عہدے سے ہٹا دیا تھا۔ وہ ٹرمپ کی انتخابی مہم میں روس کے کردار کی تحقیقات کر رہے تھے ۔

 

 

 

 

 

 

TOPPOPULARRECENT