Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / جیویلرس کی ہڑتال سے کاریگروں کی فاقہ کشی

جیویلرس کی ہڑتال سے کاریگروں کی فاقہ کشی

راجیہ سبھا میں شرد یادو کی توجہ دہانی

نئی دہلی ۔ 14 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ایک فیصد اکسائیز ڈیوٹی کی تجویز کے خلاف صرافہ تاجروں اور جیویلرس کی جاریہ پڑتال کی گونج آج راجیہ سبھا میں سنائی دی جبکہ جنتا دل متحدہ کے سربراہ شرد یادو نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ہڑتال کے خاتمہ کیلئے کوئی حل تلاشی لیا جائے، وقفہ صفر کے دوران شرد یادو نے کہا کہ ملک گیر ہڑتال سے سونا چاندی کے کاروبار سے وابستہ 35 لاکھ افراد متاثر ہیں۔ انہوں نے زیورات کی خریدی پر ایک فیصد ٹیکس کے نفاذ کو بدبختانہ قرار دیتے ہوئے حکومت سے کہا کہ احتجاجیوں سے فی الفور بات چیت کرتے ہوئے مسئلہ کا حل تلاش کیا جائے ۔ کیونکہ ہڑتال کی وجہ سے غریب کاریگر بھوکمری کا شکار ہیں۔ واضح رہے کہ وزیر فینانس ارون جیٹلی نے اپنی بچت تقریر میں جیویلری پرایک فیصد اکسائیز ڈیوٹی وصول کرنے کی تجویز پیش کی ہے۔ بعد ازاں وزیر فینانس نے یہ وضاحت کی کہ 12 کروڑ کا سالانہ کاروبار (ٹرن اوور) کرنے والے تاجرین میں ایک فیصد اکسائیز ڈیو,ی ادا کرتے ہوئے پابند ہوں گے ۔ ایک اور مسئلہ اٹھاتے ہوئے مسٹر علی انور انصاری (جے ڈی یو) نے کہاکہ جامعات میں او بی سی زمرہ کے اساتذہ کی غیر متناسب نمائندگی پائی جاتی ہے جس کے نتیجہ میں یونیورسٹیز میں ناخوشگوار حالات پیدا ہوگئے ہیں۔ علاوہ ازیں سماج وادی پارٹی کے جاوید علی خاں نے کہا کہ نومبر 2015 ء سے مولانا آزاد نیشنل فیلو شپ اسکیم کے تحت اقلیتی طلباء کے اکاؤنٹ میں فنڈس جاری نہیں کئے گئے ۔ انہوں نے بتایا کہ سرکاری طور پر اسکیم کے … اعلان نہیں کیا گیا لیکن اقلیتیطلباء کو فیلو شپ جاری نہیں کی جارہی ہے ۔ یہ فیلو شپ اقلیتی طلباء کیلئے تعلیمی تحقیقات بالخصوص ایم فل اور پی ایچ ڈی کرنے والے طلباء کیلئے ناگزیر ہے۔ سماج وادی پارٹی کے ایک اور رکن نریش اگروال نے مطالبہ کیا کہ ایرویز کے کرایوں کو باقاعدہ بنانے کیلئے ایک طریقہ کار (میکانزم) وضع کیا جائے اور یہ شکایت کی کہ حالیہ جاٹ برادری کی تحریک تحفظآت کے دوران دہلی۔چندی گڑھ کا کرایہ 90 ہزار اور دہرادون کیلئے 30 ہزار روپئے کرایہ وصول کیا گیا جس پر نائب صدرنشین راجیہ سبھا مسٹر پی جے کورین نے فضائی سفر کے کرایوں کو باقاعدہ بنانے کی مدافعت کی اور کہا کہ حکومت اس معاملہ کا جائزہ لیں۔

TOPPOPULARRECENT