Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / جی ایس ٹی سے ریلوے و بس اسٹیشنوں کی پارکنگ پر بھی اثر

جی ایس ٹی سے ریلوے و بس اسٹیشنوں کی پارکنگ پر بھی اثر

فیس میں اضافہ ، دو گھنٹوں کے لیے 12 روپئے اور ایک گھنٹہ کے لیے 7 روپئے وصولی
حیدرآباد۔6جولائی(سیاست نیوز) حکومت ہند نے جی ایس ٹی روشناس کردیا لیکن اس کے منفی اثرات پارکنگ بالخصوص فیس پر مرتب ہونے لگے ہیں اور پارکنگ کنٹراکٹ حاصل کرنے والی ایجنسیوں کی جانب سے جی ایس ٹی کے ساتھ پارکنگ فیس وصول کی جانے لگی ہے جس کی وجہ سے ریلوے اسٹیشن و بس اسٹیشن میں گاڑیاں پارک کرنے والوں پر بوجھ عائد ہونے لگا ہے ۔ مرکزی حکومت کی جانب سے نافذ کئے گئے جی ایس ٹی کے سبب سکندرآباد ریلوے اسٹیشن کے علاوہ دیگر سرکاری پارکنگ کے مقامات پر اضافی پارکنگ فیس وصول کی جانے لگی ہے ۔ ٹھکہ داروں کا کہنا ہے کہ 18فیصد جی ایس ٹی عائد کئے جانے کے بعد وہ وصول کرنے پر مجبور ہیں اسی لئے یہ اضافہ کیا گیا ہے۔ موٹر سیکل اور کار پارکنگ فیس میں اضافہ کے سبب روزانہ اسٹیشن میں گاڑی پارک کرتے ہوئے دیگر اضلاع میں ملازمت یا دیگر مقاصد کیلئے سفر کرتے ہیں انہیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ موٹر سیکل پارکنگ کیلئے اب تک ابتدائی دو گھنٹوں کیلئے 10روپئے وصول کئے جاتے تھے اور اس کے بعد ہر اضافی گھنٹہ کیلئے 5روپئے اضافہ وصول کئے جاتے تھے لیکن اب جی ایس ٹی کے بعد ابتدائی 2گھنٹوں کیلئے 12روپئے اور ہر اضافی گھنٹہ کیلئے 7روپئے کردیئے گئے ہیں۔اسی طرح کار پارکنگ کیلئے اب تک 40روپئے ابتدائی دو گھنٹوں کے لئے وصول کئے جاتے تھے لیکن اب اسے بڑھا کر 50روپئے وصول کئے جانے لگے ہیں اور اضافی گھنٹہ کیلئے 20روپئے وصول کئے جاتے تھے جو اب 25کردیئے گئے ہیں۔ ریلوے اسٹیشن پر کی جانے والی پارکنگ کیلئے اب تک 24گھنٹے موٹر سیکل پارکنگ کیلئے 40روپئے وصول کئے جاتے تھے لیکن اب اسے بڑھا کر 50کردیا گیا ہے اور کار کی 24گھنٹے پارکنگ کیلئے 340روپئے وصول کئے جاتے تھے جسے 400کردیا گیا ہے۔ پارکنگ استعمال کرنے والوں کا کہنا ہے کہ جی ایس ٹی کے نام پر کیا گیا یہ اضافہ ان کیلئے تکلیف کا سبب بن رہا ہے کیونکہ پارکنگ کا یہ خرچ ان کے روزمرہ کے اخراجات میں شامل ہے اور اس میں اضافہ ان کی جیب پر بوجھ کا سبب بن رہا ہے۔ بعض لوگوں کا الزام ہے کہ ٹھیکہ دار کی جانب سے اپنے طور پر یہ اضافہ کیا گیا اور اس اضافہ کیلئے متعلقہ محکمہ و اتھاریٹی سے اجازت حاصل نہیں کی گئی ہے کیونکہ ایسا کیاجاتا تو اس کے لئے باضابطہ اعلامیہ کی اجرائی عمل میںلائی جاتی لیکن ایسا کوئی اعلامیہ محکمہ ریلوے کی جانب سے جاری نہیں کیا گیا ہے اسی لئے اس اضافہ منظورہ قرار دیا جانا مشکل ہے جبکہ ٹھیکہ داروں کا کہنا ہے کہ سرکاری پارکنگ میں من مانی رقومات وصول نہیں کی جاسکتی۔

TOPPOPULARRECENT