Sunday , October 22 2017
Home / ہندوستان / جی ایس ٹی مسودہ قانون کی پارلیمنٹ میں پیشکشی

جی ایس ٹی مسودہ قانون کی پارلیمنٹ میں پیشکشی

نئی دہلی ۔27 مارچ  ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیرفینانس ارون جیٹلی نے لوک سبھا میں آج چار بلز پیش کیاجو گڈس اینڈ سرویس ٹیکس ( جی ایس ٹی ) ، جی ایس ٹی اعظم ترین شرح 40 فیصد کی فراہمی ، ایک مانع منافع خوری اتھاریٹی اور ٹیکس کے نادہندگان کی گرفتاری سے متعلق ہیں۔ اس اقدام کے ساتھ ہی جی ایس ٹی کے نفاذ کا عمل آخری مرحلے میں داخل ہوگیا ہے ۔ جی ایس ٹی آزادی کے بعد ٹیکس کی سب سے بڑی اصلاح ہے ۔ پارلیمنٹ میں اس قانون کی منظوری کے بعد ہندوستان کو ایک مارکٹ اور ایک ٹیکس شرح کی اُصول پر معاشی اعتبار سے ہندوستان کی یکجہتی کی راہ ہموار ہوگی اور مختلف اقسام کے ریاستی محاصل اور مرکزی ڈیوٹیز ختم ہوجائیں گی ۔ جن کے بجائے جی ایس ٹی نافذ العمل ہوجائے گا ۔ مملکتی وزیر پارلیمانی اُمور ایس ایس اہلوالیہ نے کہاکہ قانون کے مسودے جمعہ کی نصف شب سرکاری ویب سائیٹ پر پیش کردیئے گئے ۔ جیٹلی نے ایک مرکزی گڈس اینڈ سرویس ٹیکس یا سی جی ایس ٹی بل پیش کی جس میں تمام بالواسطہ مرکزی محاصل شامل ہیں۔ سی جی ایس ٹی زیادہ سے زیادہ 20 فیصد ٹیکس فراہم کریگی ۔ تاہم حقیقی شرحیں 5 ، 12 ، اور 28 فیصد کے چار ٹائر کے ٹیکس ڈھانچہ پر مبنی ہوں گے جس کو جی ایس ٹی کونسل منظور کرچکی ہے ۔ اعظم ترین شرح 40 فیصد ہے یہ ایک ایسی گنجائش ہے جو مالیاتی ہنگامی حالات میں استعمال کی جاسکتی ہے۔ ان تمام چار قانونی مسود پر ایوان میں بیک وقت بحث کی جائے گی ۔

TOPPOPULARRECENT