Wednesday , June 28 2017
Home / ہندوستان / جی ایس ٹی کے تحت روزمرہ کے استعمال کی کئی اشیاء سستی ہوں گی

جی ایس ٹی کے تحت روزمرہ کے استعمال کی کئی اشیاء سستی ہوں گی

وزارت فینانس کی فہرست جاری ، پکوان گیاس سیلنڈر ، صابن ،منرل واٹر ،ملبوسات ، انسولین ، نوٹ بکس شامل
نئی دہلی ۔ /15 جون (سیاست ڈاٹ کام) ملک بھر میں یکم جولائی سے جی ایس ٹی کے نفاذ کے نتیجہ میں نوٹ بکس ، گھریلو پکوان گیاس ، المونیم پیپر ، انسولین ، اگربتی اور روز مرہ کے استعمال کی کئی اشیاء سستی ہوں گی ۔ وزارت فینانس نے ایک بیان میں کہا کہ جی ایس ٹی کونسل نے جس ٹیکس کو منظوری دی ہے وہ موجودہ مرکز اور ریاست کے عائد کردہ مختلف محاصل سے کم ہے ۔ موجودہ ٹیکسیس میں سنٹرل اکسائز ڈیوٹی شرح ، سرویس ٹیکس ، ویاٹ ، اکسائز ڈیوٹی اور سی ایس ٹی ، آکٹرائے اور انٹری ٹیکس وغیرہ شامل ہیں ۔ نئے بالواسطہ ٹیکس نظام کے تحت اشیاء کی فراہمی ، مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی ذمہ داری ہوگی اور صرف جی ایس ٹی پر عمل ہوگا ۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ دؤدھ کا پاؤڈر دہی ، چھانچ ، مصالحے ، چائے کی پتی ، گیہوں ، چاول ، آٹا اور دیگر اشیاء کی قیمت بھی کم ہوگی ۔ وزارت فینانس نے فہرست جاری کی جس میں یہ واضح کیا گیا کہ جی ایس ٹی کے نفاذ سے قیمتوں پر کیا اثر پڑے گا اور موجودہ قیمت کے مقابلے میں کس قدر کمی واقع ہوگی ۔ اس فہرست میں منرل واٹر ، برف ، سمنٹ ، کوئلہ ، گھریلو پکوان گیاس ، ٹوتھ پاؤڈر ، سر کا تیل ، ٹوتھ پیسٹ ، کاجل ، صابن ، ایکسرے فلمس وغیرہ شامل ہیں ۔ نئے ٹیکس نظام میں پلاسٹک تارپولین ، اسکول بیاگ ، نوٹ بکس ، پتنگ ، ڈرائینگ یا کلرنگ بکس ، مخصوص ریڈی میڈ ملبوسات ، جوتے اور ہیلمٹ وغیرہ بھی سستے ہوں گے ۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ نئے ٹیکس کے نتیجہ میں کھوپرے کا تیل ، شکر ، گڑ ، پاستہ ، میکرونی ، نوڈلس ، فروٹ اور ویجیٹیل اشیاء اور غذائی اشیاء جیسے اچار ، مربہ ، چٹنی ، کیچپ اور ساؤس بھی سستے ہوں گے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT