Friday , September 22 2017
Home / Top Stories / جی ایس ٹی ہندوستان کی معیشت کا اہم موڑ ثابت ہوگا

جی ایس ٹی ہندوستان کی معیشت کا اہم موڑ ثابت ہوگا

جی ایس ٹی ہندوستان کی معیشت کا اہم موڑ ثابت ہوگا
یکم جولائی سے عمل آوری کے سلسلہ میں تیاریوں کا جائزہ، وزیراعظم نریندر مودی کا عہدیداروں کے ساتھ تبادلہ خیال

نئی دہلی 5 جون (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے آج یکم جولائی سے متعارف کئے جانے والے گڈس اینڈ سرویسس ٹیکس (جی ایس ٹی) کی تیاریوں کا جائزہ لیا۔ اُنھوں نے کہاکہ یہ ملک کی معیشت میں اہم موڑ ثابت ہوگا۔ جی ایس ٹی کو ہندوستان کی تاریخ میں غیر متوقع لمحہ قرار دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہاکہ ’’ایک قوم، ایک مارکٹ اور ایک ٹیکس سسٹم‘‘ کو یقینی بنانے سے عام آدمی کو غیرمعمولی فائدہ ہوگا۔ اُنھوں نے جی ایس ٹی متعارف کرنے کے سلسلہ میں پیش آئے مختلف مراحل اور دیگر تفصیلات سے بھی واقفیت حاصل کی۔ اُنھوں نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ آئی ٹی سسٹم سے مربوط جی ایس ٹی میں سائبر سکیورٹی پر خصوصی توجہ دی جائے۔ یہ اجلاس تقریباً ڈھائی گھنٹے جاری رہا جس میں وزیر فینانس ارون جیٹلی کے علاوہ وزارت فینانس اور پی ایم او کے سینئر عہدیداران، کابینی سکریٹری بھی شریک تھے۔ وزیراعظم نے کہاکہ یکم جولائی سے جی ایس ٹی پر عمل آوری دراصل تمام فریقین بشمول سیاسی جماعتوں، تجارت اور صنعتی اداروں کی اب تک کی کوششوں کا نتیجہ ہوگی۔ اُنھوں نے جی ایس ٹی کو ملک کی معیشت کے لئے اہم موڑ اور تاریخ کا غیر معمولی قدم قرار دیا۔ اجلاس میں وزیراعظم نے جی ایس ٹی پر عمل آوری کے سلسلہ میں مختلف پہلوؤں جیسے آئی ٹی، ہیومنس ریسورس، عہدیداروں کو تربیت اور مختلف شبہات کے ازالہ کے لئے متعارف کردہ نظام کے بارے میں تفصیلات حاصل کیں۔ اُنھیں بتایا گیا کہ جی ایس ٹی سسٹم میں مختلف اُمور جیسے آئی ٹی انفراسٹرکچر، عہدیداروں کو ٹریننگ، بینکوں کے ساتھ باہم ربط اور موجودہ ٹیکس دہندگان کا اندراج وغیرہ یکم جولائی کو عمل آوری کی تاریخ سے پہلے پورا کرلیا جائے گا۔ انفارمیشن سکیوریٹی سسٹمس پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ جی ایس ٹی کے بارے میں مختلف شبہات اور سوالات کا جواب دینے کے لئے خصوصی ٹوئٹر اکاؤنٹ شروع کیا گیا ہے۔ اِس کے علاوہ آل انڈیا ٹال فری فون نمبر 1800-1200-232 بھی کارکرد کیا جارہا ہے۔
فطرت کیساتھ ہم آہنگی کے ذریعہ کرۂ ارض کا تحفظ : مودی
وزیراعظم نے کہا کہ فطرت کے ساتھ ہم آہنگی قائم کرکے ہی زمین پرخطرناک صورت حال سے بچنے کا واحد طریقہ ہے لہذا اس سمت میں کافی سنجیدگی سے سوچنے اور کوشش کرنے کی ضرورت ہے ۔گزشتہ ہفتے امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے امریکہ کو پیرس موسمیاتی معاہدے سے الگ کرنے کے اعلان پر رد عمل میں وزیر اعظم نے صاف کہا تھا کہ ‘پیرس یا نوپیرس’ اس سے ہندوستان کو کوئی فرق نہیں پڑتا کیونکہ فطرت کا تحفظ آج سے نہیں بلکہ ازل سے ہندوستان کی تہذیب ثقافت کا اہم حصہ رہا ہے ۔ ماحولیات کے تحفظ کے تئیں ہندوستان پابند عہد ہے ۔ موجودہ نسل کو آنے والی نسل سے ایک صاف اور صحت مند زمین پر رہنے کا حق چھیننے کاکوئی اختیار حاصل نہیں ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT