Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / جی ایچ ایم سی انتخابات پر بائیں بازو جماعتوں کا مشترکہ پلیٹ فارم پر غور

جی ایچ ایم سی انتخابات پر بائیں بازو جماعتوں کا مشترکہ پلیٹ فارم پر غور

حکومت سے مقابلہ کی تیاری ، سی وینکٹ ریڈی سی پی آئی تلنگانہ سکریٹری کی پریس کانفرنس
حیدرآباد۔14ڈسمبر(سیاست نیوز) مجوزہ بلدی انتخابات کے لئے بائیں بازو جماعتوں کے مشترکہ پلیٹ فارم کی تیاری پر کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا تلنگانہ سکریٹری اسٹیٹ چاڈا وینکٹ ریڈی نے کہاکہ گریٹر حیدرآباد اور اس کے مضافات میں قائم کی گئی بستیوں میں لال جھنڈوں کا زیادہ اثر ہے ۔ کمیونسٹ نے ان بستیوں کو بسانے میں اہم رول اد ا کیا ۔ آج یہاں پارٹی ہیڈ کوارٹر مخدوم بھون میںمنعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چاڈا وینکٹ ریڈی نے کہاکہ مجوزہ بلدی انتخابات میںمقابلہ کے لئے بائیںبازو جماعتوں کی جانب سے حکمت عملی تیار کی جارہی ہے ۔انہوں نے ریاست تلنگانہ میںبرسراقتدار حکمران جماعت کے رویہ کو پر کڑی تنقید کا نشانہ بنایااور کہاکہ بلدی انتخابات کے پیش نظر ڈبل بیڈرومس فلیٹس کی تعمیر کے لئے سنگ بنیاد رکھے جارہے ہیں ۔ انہوں نے کہا حکومت سے گریٹر حیدرآباد حدود کی سلم بستیوں میںبرقی او رآبرسانی بلوں کی معافی کا بھی اعلان کیا گیا اور ٹیکس میںرعایت کے متعلق بھی دعوے کئے جارہے ہیںجبکہ مذکورہ تمام اسکیمات صرف کاغذی ہیں ۔ برخلاف اس کے حکومت تلنگانہ جی او 214کو منسوخ کرنے کے متعلق بائیںبازو جماعتوں کے مطالبات کو یکسر نظر انداز کرتے ہوئے سرکاری اراضیات پر رہائش پذیر بے گھر افراد کا آشیانہ چھین لینے کیلئے پوری تیاری میں ہے۔ چاڈا وینکٹ ریڈی نے کہاکہ حکومت تلنگانہ کی معلنہ ہاوز نگ اسکیم‘ برقی اور آبرسانی بقایہ جات کی معافی او رٹیکس میںرعایت کے متعلق حکومت تلنگانہ کے لائحہ عمل پر کل جماعتی اجلاس منعقد کرنے کا اپوزیشن جماعتوں کی جانب کی جارہی نمائندگی کو بھی چیف منسٹر نظر انداز کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا بلدی انتخابات میںووٹ حاصل کرنے کے لئے شہر ی عوام کو گمراہ کرنے کی کوششیں غیر جمہوری ہیں۔ اسٹیٹ سکریٹری سی پی آئی ایم تمنینی ویرا بھدرم نے تلنگانہ میں برسراقتدار ٹی آر ایس پارٹی کے مشن آکرشن کی سختی کیساتھ مذمت کی اور کہاکہ ڈیموکریسی میں اس قسم کے حربے نقصان پہنچانے والی سیاست کا حصہ سمجھے جاتے ہیں۔ طاقت و دولت او راقتدار کا لالچ دیکر منتخب ایم ایل اے ‘ زیڈ پی ٹی سی ‘ ایم پی ٹی سی کو حکمران جماعت میں شامل ہونے کے لئے مجبور کرنا حکمران جماعت کی ناکامی کا ثبوت ہے۔انہوں نے کہا جمہوری انداز میںہونے والے انتخابات میں ڈرا دھماکر اپوزیشن جماعتوں کے قائدین کو انتخابات سے دستبردار ہونے پر مجبور کرنا ایک غیر جمہوری اورغیر دستوری طریقہ کار ہے جو ریاست کی ترقی کے ساتھ جمہوری نظام کے لئے بھی نقصاندہ ثابت ہوگا۔ویرا بھدرم نے آنے والے دنوں میںبائیں بازو جماعتوں کی جانب سے متحد ہوکر حکومت کی عوام دشمن پالیسیوں کو عوام کے سامنے لانے کا بھی اعلان کیا اور کہاکہ بلدی انتخابات میں لیفٹ پارٹیز ساتھ مل کر مقابلہ کریں گے ۔ انہوں نے اس ضمن میں 16ڈسمبر کومنعقد ہونے والے لیفٹ پارٹیز اجلاس کا بھی ذکر کیا۔

TOPPOPULARRECENT