Sunday , August 20 2017
Home / Top Stories / جی ایچ ایم سی انتخابات کے لئے کانگریس قائدین کی حکمت عملی

جی ایچ ایم سی انتخابات کے لئے کانگریس قائدین کی حکمت عملی

گریٹر حیدرآباد سٹی قائدین کا نظریاتی اختلافات ختم کرکے متحدہ مقابلہ کرنے سے اتفاق
حیدرآباد /8 دسمبر (سیاست نیوز)  کانگریس قائدین گریٹر حیدرآباد سٹی نے نظریاتی اختلافات ختم کرتے ہوئے متحدہ طورپر جی ایچ ایم سی انتخابات کا سامنا کرنے کا اعلان کیا ہے۔ آج ہوٹل گولکنڈہ میں گریٹر حیدرآباد کانگریس رابطہ کمیٹی کا ایک اجلاس منعقد ہوا، جس میں تازہ سیاسی صورت حال، پارٹی قائدین کی وفاداریوں کی تبدیلی، بلدی انتخابات کی تیاری، امیدواروں کے انتخاب اور انتخابی حکمت عملی پر غور کیا گیا۔ بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے صدر تلنگانہ پردیش کانگریس اتم کمار ریڈی نے کہا کہ شہر حیدرآباد کی ترقی کانگریس کی مرہون منت ہے۔ کانگریس دور حکومت میں انجام دیئے گئے ترقیاتی و تعمیراتی کاموں پر ٹی آر ایس حکومت اپنی مہر لگاکر اپنا کارنامہ ثابت اور عوام کو گمراہ کر رہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت میں حیدرآباد کی کوئی ترقی نہیں ہوئی، کیونکہ دریائے گوداوری اور کرشنا سے شہر حیدرآباد میں پانی کانگریس دور حکومت میں آیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ حیدرآباد کے مسلمانوں اور سٹلرس سے رجوع ہونے کے لئے کانگریس نے خصوصی پلان تیار کیا ہے۔ انھوں نے حکمراں جماعت پر سیاسی وفاداری تبدیل کرنے کی حوصلہ افزائی کا الزام عائد کیا۔ قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے کہا کہ کانگریس دور حکومت (2004-14ء) کے دوران گریٹر حیدرآباد کی ترقی کے لئے ایک لاکھ کروڑ روپئے خرچ کئے گئے، لہذا ان ترقیاتی کاموں کو بنیاد بناکر کانگریس پارٹی عوام سے ووٹ طلب کرے گی۔ انھوں نے حکومت کی جانب سے بلاوقفہ برقی سربراہی کے اعلان کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ ٹی آر ایس کے 18 ماہی دور حکومت میں ایک یونٹ بھی برقی پیداوار نہیں ہوئی۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس کے تمام قائدین متحد ہیں اور سب متحدہ طورپر بلدی انتخابات کا سامنا کریں گے۔ سکریٹری اے آئی سی سی و رکن راجیہ سبھا وی ہنمنت راؤ نے کہا کہ مجلس کی پہچان کانگریس کی مرہون منت ہے اور کانگریس کے دور میں ہی پرانے شہر کی ترقی ہوئی ہے۔ انھوں نے بہار کے طرز پر تمام ہم خیال و سیکولر نظریات کی حامل جماعتوں سے اتحاد یا مفاہمت کرکے حکمراں ٹی آر ایس، بی جے پی اور مجلس کو شکست دینے کی پالیسی تیار کرنے اور پرانے شہر میں کانگریس کو طاقتور بنانے کا مشورہ دیا۔ صدر گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن ڈی ناگیندر نے کہا کہ ماضی کی غلطیوں کو فراموش کرکے آگے بڑھنے کی ضرورت ہے، لہذا تمام قائدین متحد ہوکر جوش و جذبہ کے ساتھ گریٹر حیدرآباد کے بلدی انتخابات کا سامنا کریں گے اور ترقیات کی بنیاد پر عوام کا اعتماد حاصل کریں گے۔ انھوں نے کہاکہ کانگریس کا دور شہر حیدرآباد کے لئے سنہرا دور تھا۔

TOPPOPULARRECENT