Friday , April 28 2017
Home / شہر کی خبریں / جی ایچ ایم سی حیدرآباد کو ملک کی پہلی ای ۔ آفس کا اعزاز

جی ایچ ایم سی حیدرآباد کو ملک کی پہلی ای ۔ آفس کا اعزاز

حیدرآباد۔10فروری (سیاست نیوز) جی ایچ ایم سی ملک میں پہلی بلدیہ ہے جہاں ای۔آفس کے نظریہ کو فروغ دینے کے اقدامات کئے جا رہے ہیں اور اب تک 80ہزار ای۔ فائیلس تیار کئے جا چکے ہیںجس کے سبب پیپر کا استعمال اور پیپر فائیلس کی حفاظت کے مسائل ختم ہو جائیں گے۔ ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی کمشنر مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے بتایا کہ شہر حیدرآباد میں جی ایچ ایم سی کی جانب سے انفارمیشن ٹکنالوجی کو اختیار کرتے ہوئے عوام کو سہولتوں کی فراہمی کے علاوہ دفاتر کو ای۔گورننس سے مربوط کرنے کے اقدامات تیزی کے ساتھ انجام دیئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ای۔آفس کیلئے جی ایچ ایم سی نے 80ہزار ای۔فائیلس تیار کرلئے ہیں جبکہ ملک کی تمام بلدیات میں تاحال صرف 4 لاکھ 69 ہزار 754ای۔فائیلس تیار کی گئی ہیں۔ کمشنر جی ایچ ایم سی نے بتایا کہ حیدرآباد میں تعمیراتی کاموں کیلئے اجازت نامہ کے حصول کیلئے آن لائن درخواست کا طریقہ کار روشناس کروایا گیا اسی طرح شہریو ںکی سہولت کیلئے MY GHMCموبائیل اپلیکیشن روشناس کروایا گیا ہے جس کے ذریعہ شہری نہ صرف اپنے ٹیکس ادا کرسکتے ہیں بلکہ اپنے مسائل کے متعلق راست شکایت کروا سکتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اس اپلیکیشن کے ذریعہ شہری پیدائش اور موت کا صداقتنامہ بھی حاصل کرسکتے ہیںاور ٹریڈ لائسنس کی فیس کی ادائیگی کی سہولت بھی اس اپلیکیشن میں موجود ہے۔ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے بتایا کہ شہر میں موجود تمام 19سیٹیزن سروس سنٹر پر سوائپنگ مشین کی تنصیب کے ذریعہ جی ا یچ ایم سی نے نقد کے بغیر لین دین کے نظام کو فروغ دینے میں کلیدی کردار ادا کیا ہے ۔اسی طرح جی ایچ ایم سی کے صفائی عملہ کی حاضری کو یقینی بنانے کیلئے مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے 22ہزار کے صفائی عملہ اور دیگر کی بائیومیٹرک حاضری کے نظام کو متعارف کروایا گیا تاکہ صفائی عملہ کی خدمات سے بھرپور استفادہ کیا جاسکے۔ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے کہا کہ جی ایچ ایم سی حدود میں موجود تمام جائیدادوں کی جیو ٹیاگنگ کا عمل جاری ہے اور بہت جلد تمام مکانات اور کھلے مقامات کی تفصیلات آن لائن تیار ہوجائیں گی اور ان میں شہر کی مکمل تفصیل موجود رہے گی۔انہوں نے مزید بتایا کہ فٹ پاتھ پر قبضہ جات کے خاتمہ کیلئے ٹریفک پولیس کے ساتھ اعانت میں ایک اپلیکیشن تیار کیا گیا ہے اور اس اپلیکیشن کی مدد سے فٹ پاتھ پر موجود قبضہ جات کی برخواستگی کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں اور اس اپلیکیشن کے ذریعہ شواہد اکٹھا کرتے ہوئے عدالت میں پیش کیا جا رہا ہے۔کمشنر جی ایچ ایم سے نے بتایا کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کا انفارمیشن ٹکنالوجی انتہائی مستعد ہے اور جی ایچ ایم سی آئی ٹی ترقی کیلئے متعدد اقدامات کئے جا رہے ہیں تاکہ شہریوں کو سہولتیں بہم پہنچائی جا سکیں۔انہوں نے بتایا کہ کچہرے کی نکاسی کی گاڑیوں کو ٹریکنگ سسٹم سے مربوط کرتے ہوئے ان کی کارکردگی کا جائزہ لیا جا رہا ہے اور بہت جلد اس ٹریکنگ سسٹم کو دیگر گاڑیوں سے بھی مربوط کرنے کا منصوبہ ہے تاکہ سرکاری گاڑیوں کے غلط استعمال کو روکا جا سکے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT