Tuesday , October 24 2017
Home / شہر کی خبریں / جی ایچ ایم سی پر ٹی آر ایس کے قبضہ کی تیاریاں

جی ایچ ایم سی پر ٹی آر ایس کے قبضہ کی تیاریاں

حیدرآباد۔ 25 اکتوبر (سیاست نیوز) تلنگانہ راشٹرا سمیتی آئندہ چند ماہ کے دوران گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کیلئے منعقد ہونے والے انتخابات میں اپنی شاندار کامیابی کے ذریعہ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن آفس واقع ٹینک بنڈ پر اپنا گلابی پرچم لہرانے کے مقصد سے اپنی تیاریوں کا آغاز کرچکی ہے۔ گریٹر حیدرآباد ٹی آر ایس قائدین و کارکنوں کو انتخابات کیلئے تیار رہنے کی ہدایت بھی دی گئی ہے بلکہ اس سلسلے میں اپنی حکمت عملی کو قطعیت دینے کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ اسی دوران ٹی آر ایس کے باوثوق ذرائع کے مطابق بتایا جاتا ہے کہ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن انتخابات کے سلسلے میں گریٹر حیدرآباد سٹی کے پارٹی اُمور انچارج وزراء مسرز کے ٹی راما راؤ وزیر پنچایت راج، جگدیش ریڈی وزیر توانائی کے علاوہ گریٹر حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے وزراء بشمول ڈپٹی چیف منسٹر مسٹر محمد محمود علی، وزیر کمرشیل ٹیکس ٹی سرینواس یادو، وزیر داخلہ مسٹر این نرسمہا ریڈی، وزیر نشہ بندی و آبکاری ٹی پدما راؤ گوپی، وزیر ٹرانسپورٹ مسٹر پی مہیندر ریڈی اور صدر گریٹر حیدرآباد تلنگانہ راشٹرا سمیتی کمیٹی مسٹر ایم ہنمنت راؤ جی ایچ ایم سی انتخابات پر اپنی حکمت عملی کو قطعیت دینے کیلئے سنجیدگی سے غوروخوض شروع کرچکے ہیں۔ جی ایچ ایم سی کے 150 بلدی وارڈس میں دورے کرکے پارٹی کے موقف سے واقفیت حاصل کرکے تلنگانہ راشٹرا سمیتی کی زیرقیادت تلنگانہ حکومت کی فلاح و بہبودی اقدامات کو عوام تک پہنچانے اور پارٹی کو مضبوط و مستحکم بنانے کیلئے بھی عملی اقدامات کئے جائیں گے۔ اسی دوران بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ اسمبلی انتخابات کے بعد گریٹر حیدرآباد سٹی حدود میں دیگر جماعتوں سے تعلق رکھنے والے ارکان اسمبلی، ارکان کونسل کے علاوہ مختلف اسمبلی حلقوں کے انچارج قائدین و کارکن کثیر تعداد میں ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرچکے ہیں جس کی وجہ سے پارٹی کی رکنیت سازی کے سلسلے میں عوامی مثبت ردعمل حاصل ہوا ہے، لہذا پارٹی کے ابتداء سے موجودہ قائدین و کارکنوں کے علاوہ دیگر پارٹیوں سے ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرنے والے قائدین و کارکنوں پر مشتمل اتفاق آرا ہر ایک کیلئے قابل قبول گریٹر حیدرآباد ٹی آر ایس کی عاملہ کی تشکیل کیلئے عملی اقدامات کا آغاز ہوچکا ہے۔ پارٹی دستور کے مطابق پارٹی عاملہ 51 افراد پر مشتمل ہونا چاہئے لیکن گریٹر حیدرآباد سٹی کے تحت 24 حلقہ جات اسمبلی ہونے کے باعث گریٹر حیدرآباد ٹی آر ایس عاملہ 150 افراد کے شاتھ تشکیل کی اجازت دینے کیلئے مسٹر ایم ہنمنت راؤ صدر ٹی آر ایس گریٹر حیدرآباد سٹی کمیٹی نے صدر ٹی آر و چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ سے خواہش کی ہے جس پر انہوں نے مثبت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اجازت دی ہے۔ صدر پارٹی سے اجازت حاصل ہونے کے ساتھ ہی مسٹر ہنمنت راؤ نے گریٹر حیدرآباد سٹی کے تمام وزراء اور قائدین سے مشاورت کرکے گریٹر حیدرآباد سٹی کی عاملہ کا انتخاب مکمل کرلیا ہے اور توقع کی جارہی ہے کہ بہت جلد عاملہ کا اعلان کیا جائے گا۔ پارٹی ذرائع کے مطابق نامزد عہدوں پر اب تک پارٹی قائدین کو نامزد نہ کرنے اور صرف زبانی اعلانات کے ذریعہ وقت گذاری کرنے پر پارٹی قیادت کی کوششوں پر پارٹی قائدین میں ناراضگیاں ہیں۔ پارٹی قیادت ابتداء سے پارٹی میں سرگرم قائدین و کارکنوں کو نظرانداز کرکے حالیہ دنوں میں دیگر پارٹیوں سے ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرنے والے قائدین و کارکنوں کو اہمیت دیئے جانے کی وجہ سے پارٹی حلقوں میں مایوسی و ناراضگیاں ہیں لہذا گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن انتخابات سے قبل ہی نامزد عہدوں پر پارٹی کے سینئر قائدین کی نامزدگی عمل میں آنے پر ہی پارٹی قائدین میں نیا جوش اور حوصلہ پیدا ہونے کی امید کی جاسکتی ہے، بصورت دیگر گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن انتخابات میں پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم کے ساتھ ہی کئی سینئر قائدین و کارکن ٹی آر ایس سے مستعفی ہوکر دیگر پارٹیوں میں شامل ہونے کے امکانات ہیں۔ اسی دوران ٹی آر ایس قائدین نے عوامی مقبولیت رکھنے والے پارٹی قائدین و کارکنوں کو ہی گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے مجوزہ انتخابات میں پارٹی ٹکٹ دینے کا اظہار کیا اور کہا کہ پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم میں کسی سفارش یا پیرویوں کو خاطر میں نہیں لایا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT