Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / جی نرنجن کے بیان سے مسلمانوں کے جذبات کوٹھیس

جی نرنجن کے بیان سے مسلمانوں کے جذبات کوٹھیس

صدر تلنگانہ پی سی سی اتم کمار سے صدر اقلیت ڈپارٹمنٹ کی شکایت
حیدرآباد ۔ 28 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : صدر تلنگانہ پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ مسٹر محمد خواجہ فخر الدین نے کانگریس ترجمان جی نرنجن کے بیان سے مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہونچنے کی صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی سے شکایت کی ۔ دوسرے اقلیتی قائدین نے بھی اس کی مذمت کرتے ہوئے نرنجن سے وضاحت طلب کرنے کا پارٹی قیادت سے مطالبہ کیا ۔ مسٹر خواجہ محمد فخر الدین نے آج شام صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کی قیام گاہ پہونچکر ان سے ملاقات کی ۔ اقلیتی کنونش کی تیاریوں پر تبادلہ خیال کرنے کے بعد کانگریس کے ترجمان جی نرنجن کے یوم انضمام حیدرآبادکو سرکاری طور پر مناتے ہوئے مسلمانوں کے خلاف زہر افشانی کرنے کی شکایت کی ۔ جس سے مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہونچی ہے انہیں تلنگانہ کے کئی اضلاع سے ان کے خلاف شکایتی ٹیلی فون وصول ہوئے ہیں اگر جی نرنجن کی یہ شخصی رائے ہے تو وہ الگ بات ہے لیکن انہوں نے گاندھی بھون کا پلیٹ فارم استعمال کیا ہے جس سے عوام بالخصوص مسلمانوں کو غلط پیغام پہونچا ہے ۔ کانگریس پارٹی مسلمانوں کو قریب کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ حیدرآباد اور ورنگل میں اقلیتی کنونشن کا اہتمام کیا جارہا ہے ۔ لیکن نرنجن جیسے قائدین کانگریس پارٹی اور اقلیتوں کے درمیان دیوار کھڑی کررہے ہیں ۔ ہمیشہ وہ اقلیتوں کے خلاف متنازعہ بیانات دینے کے عادی ہیں ۔ انہیں فوری کنٹرول کیا جائے ۔ ترجمان تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر ایس کے افضل الدین نے کہا کہ یوم نجات سے متعلق مسٹر جی نرنجن کا بیان غیر ذمہ دارانہ ہے۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اس مسئلہ پر ان سے وضاحت طلب کریں ۔ جی نرنجن کی بیان بازی کانگریس کے لیے نقصان دہ ثابت ہورہی ہے ۔ 1948 میں پولیس ایکشن کے نام پر مسلمانوں پر ظلم ڈھایا گیا تھا ۔ اس کی پنڈت سندر لال اور سروجنی جیسی اہم شخصیتوں نے افسوس کا اظہار کیا تھا ۔ لاکھوں مسلمانوں کے قتل عام کی تاریخ سے نرنجن واقف نہیں ہے ۔ چارمینار سے متصل مندر کے مسئلہ پر انہوں نے تنازعات پیدا کئے تھے ۔ سابق رکن اسٹیٹ حج کمیٹی مسٹر خواجہ ذاکر الدین نے جی نرنجن کو خاکی چڈی والا کانگریس قائد قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ ہر وقت مسلمانوں کی دلآزاری کا موقع تلاش کرتے رہتے ہیں ۔ پردیش کانگریس کمیٹی ان کے خلاف کارروائی کرے ورنہ پارٹی کے تعلق سے اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں میں غلط پیغام پہونچے گا ۔ کانگریس پارٹی گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن انتخابات کی تیاریاں کررہی ہیں دوسری طرف نرنجن کانگریس کو نقصان پہونچانے والے بیانات دے رہے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT