Thursday , August 24 2017
Home / ہندوستان / جے این یو صنفی کمیٹی کے انتخابات میں تاخیر

جے این یو صنفی کمیٹی کے انتخابات میں تاخیر

غداری کے تنازعہ میں طلبہ کو ملزم قرار دیئے جانے پر انتخابات متاثر
نئی دہلی ۔17اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) ملک گیر سطح پر غداری کے موضوع پر جاری مباحث کی وجہ سے جس میں جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے چند طلبہ کو بھی غداری کے الزام میں ملزم قرار دیا گیا ہے ‘یونیورسٹی کی تعلیمی کارکردگی کو ہی متاثر نہیں کررہا ہے بلکہ اس کی وجہ سے سیاسی طور پر سرگرم تعلیمی ادارہ کے انتخابی عمل پر بھی اثر مرتب ہوا ہے ۔جواہر لال نہرو یونیورسٹی کی صنفی حساسیت کمیٹی کے انتخابات میں تاخیر ہوگئی ہے ۔ یہ کمیٹی جنسی ہراسانی کے خلاف قائم کی گئی ہے اور جنسی ہراسانی کی شکایت کی یکسوئی کرتی ہے ۔ یہ کمیٹی دو منتخبہ طلبہ نمائندوں ‘ تدریسی عملہ کے ارکان ‘ دفتر کے ارکان عملہ اور جواہر لال نہرو یونیورسٹی طلبہ یونین کے نمائندوں پر مشتمل ہوتی ہے ۔ جواہر لال نہرو یونیورسٹی آفیسرس اسوسی ایشن اور جواہر لال نہرو یونیورسٹی اسٹاف اسوسی ایشن کے عہدیداروں نے کہا کہ طلبہ کی نمائندگی کیلئے انتخابات جو ہر سال اپریل میں منعقد کئے جاتے تھے اب پانچ ماہ کی تاخیر سے منعقد کئے جائیں گے ۔ کیونکہ یونیورسٹی کے احاطہ میں ہال ہی میں گڑبڑ ہوچکی ہے ۔ انتخابات کے عمل کا آغاز فبروری کے اختتام سے ہی ہوجاتا تھا لیکن اس بار تین طلبہ کے غداری کے مقدمہ میں گرفتار کئے جانے کے بعد اور اس کے بعد پیدا ہونے والے تنازعات کی وجہ سے انتخابات کا انعقاد ممکن نہیں ہے ۔ جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے طلبہ یونین کی نائب صدر شہیلا راشد شوریٰ نے کہا کہ امتحانات کا آئندہ ہفتہ آغاز ہورہا ہے ۔ اسکے بعد یونیورسٹی کو گرمائی تعطیلات ہوں گی ‘اسلئے کمیٹی کے انتخابات طلبہ یونین کے انتخابات کے ساتھ آئندہ ستمبر میں ہی منعقد کئے جاسکیں گے ۔ کمیٹی کے انتخابات طلبہ یونین انتخابات سے پہلے ہوا کرتے تھے تاہم صنفی کمیٹی کے تقدیس برقرار رکھنے کیلئے فیصلہ کیا گیا ہے کہ تین سال قبل دو انتخابات علحدہ علحدہ طور پر منعقد کئے جاتے تھے لیکن اب ایک ساتھ منعقد کئے جائیں گے ۔ کمیٹی کا یونیورسٹی میں اہم کردار ہے کیونکہ حالیہ عرصہ میں دہلی کے تعلیمی ادارہ میں گذشتہ دو سال کے دوران جنسی ہراسانی کی شکایتوں کی تعداد میں نمایاں اضافہ ہوا ہے ۔ یونیورسٹی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ یہ اضافہ شکایات داخل کرنے کی حوصلہ افزائی کا نتیجہ ہے ۔ قبل ازیں طالبات عموماً شکایات کرنے سے گریز کرتی تھیں کیونکہ اس سے خود ان کی بدنامی کا اندیشہ ہوتا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT