Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / جے این یو طلباء کی بھوک ہڑتال 10 ویں دن میں داخل

جے این یو طلباء کی بھوک ہڑتال 10 ویں دن میں داخل

اظہار یگانگت کیلئے اساتذہ اور قدیم طلباء کا بھی احتجاج
نئی دہلی ۔ 7 مئی (سیاست ڈاٹ کام) جواہر لعل یونیورسٹی کے طلباء کی غیر معینہ بھوک ہڑتال آج  10 ویں دن میں داخل ہوگئی جبکہ اسٹوڈنٹس یونین صدر کنہیا کمار نے طبی وجوہات کی بنا اپنی بھوک ہڑتال سے دستبرداری اختیار کرلی ۔ تاحال 6 طلباء نے 9 فبروری کے واقعہ کے سلسلہ میں یونیورسٹی کی تادیبی کارروائی کے خلاف اپنا احتجاج ختم کردیا ۔ جس کے دوران قوم دشمن نعرے بلند کرنے کا الزام ہے تاہم دیگر 14 طلباء بھوک ہڑتال جاری رکھے ہوئے ہیں ۔ کنہیا کمار جو کہ بغاوت کیس میں اپنی گرفتاری کے بعد ضمانت پر رہا ہوئے ہیں بھوک ہڑتال کے دوران طبعیت بگڑجانے پر آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ اف میڈیکل سائنس میں علاج کے بعد کل ہی ڈسچارج کردیئے گئے ہیں اور کل شب وہ کیمپس واپس آگئے ۔ جہاں پر ڈاکٹروں نے انہیں دوبارہ بھوک ہڑتال نہ کرنے کا مشور ہ دیا ۔ صدر یونین نے بتایا کہ اگرچیکہ بھوک ہڑتال سے دستبرداری اختیار کرلی ہے لیکن اپنا احتجاج بدستور جاری رکھیں گے ۔ جبکہ بھوک ہڑتال کرنے والے دیگر طلباء کی صحت بھی بگڑتے جارہی ہے اور وہ کمزوری اور نقاہت کا شکار ہوگئے ہیں ۔ دریں اثناء جے این یو ٹیچرس اسوسی ایشن نے آج یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف بطور احتجاج زنجیری بھوک ہڑتال کرنے کا اعلان کیا۔ علاوہ ازیں قدیم طلباء بھی طلباء کے احتجاج سے اظہار یگانگت کیلئے انسانی زنجیر  بنائیں گے ۔ واضح رہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے تادیبی کارروائی کرتے ہوئے کنہیا کمار کے خلاف 10 ہزار روپئے کا جرمانہ ، عمر ، انیربن اور ایک کشمیری طالب علم مجیب گنٹو کو عارضی طور پر معطل کردیا ہے ۔ علاوہ ازیں اے بی وی پی لیڈر کے خلاف بھی ٹریفک روکنے پر 10 ہزار کا جرمانہ عائد کیا گیا ہے ۔ وہ حکمراں بی جے پی کی محاذی تنظیم کے واحد لیڈر ہیں جنھیں یہ سزاء دی گئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT