Saturday , July 29 2017
Home / ہندوستان / حاجی علی کنارا مسجد کو نہ ہٹانے کی مہاراشٹر حکومت کی عرضی مسترد

حاجی علی کنارا مسجد کو نہ ہٹانے کی مہاراشٹر حکومت کی عرضی مسترد

ممبئی،13جولائی(سیاست ڈاٹ کام) ممبئی میں حاجی علی درگاہ کے قریب کنارا مسجد کو بچانے کی قانونی جنگ مہاراشٹر حکومت سپریم کورٹ میں ہار گئی۔ سپریم کورٹ نے اس سلسلے میں کورٹ کے حکم کو چیلنج کرنے والی حکومت کی درخواست کو مسترد کر دیا۔ مہاراشٹر حکومت کی جانب سے پیش ہوئے وکیل نشانت ٹنیشو کی دلیلوں کو عدالت نے قبول نہیں کیا، بلکہ ان کی سرزنش کی۔ چیف جسٹس جے ایس کھیر اور جسٹس ڈی وائی چندراچوڑ کی بنچ سے مہاراشٹر کے وکیل نے کہا کہ کنارا مسجد کو ہٹانے سے صورتحال بگڑ سکتی ہے ، لیکن کورٹ نے اس دلیل کو مسترد کر دیا۔کورٹ نے انہیں پھٹکار لگاتے ہوئے پوچھا کہ جب درگاہ ٹرسٹ کو کوئی پریشانی نہیں ہے تو مہاراشٹر اس میں اتنی دلچسپی کیوں دکھا رہی ہے۔ کورٹ نے کہاکہ بمبئی ہائیکورٹ نے تمام طرح کی تعمیرات ہٹانے کا حکم دیا تھا۔ درگاہ ٹرسٹ نے اس حکم کو عدالت میں چیلنج کیا تھا، لیکن نہ تو ٹرسٹ نے اور نہ ہی کسی دوسرے شخص کی طرف سے یہ کہاگیا تھا کہ کنارا مسجد کو نہ ہٹایا جائے ۔ ہمیں ایسا لگتا ہے کہ صرف آپ ہی ہیں جنہیں ہائیکورٹ کا حکم ماننے میں دقت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT