Sunday , August 20 2017
Home / دنیا / حادثہ کے مقام پر ویڈیو اتارنے اور شیئر کرنے پر سزا

حادثہ کے مقام پر ویڈیو اتارنے اور شیئر کرنے پر سزا

مناما 20 مئی (سیاست ڈاٹ کام) ایسے لوگ جو کسی حادثہ کے مقام پر درد سے کراہتے یا انتہائی تکلیف میں مدد کے لئے چلانے والے لوگوں کی مدد کرنے کی بجائے ان کی ویڈیو لینے والوں اور انہیں سوشل میڈیاپر شیئر کرنے والوں کو اب سخت سزائیں دی جائیں گی۔ اطلاعات کے مطابق ایسا کرنے والوں کو چھ ماہ کی سزائے قید اور 500 بحرینی دینار کا جرمانہ بھی عائد کیا جاسکتا ہے۔ ٹریفک قانون میں ترمیم کے لئے پارلیمنٹ میں ایک بل زیر غور ہے اور ہفتہ واری سیشن میں اس موضوع پر تفصیلی بحث کی گئی۔ حکومت نے اس بل کو قانون سازی میں تبدیل کرنے کی حمایت کی کیونکہ اس تجویز کو اگر قانون میں تبدیل کردیا جائے تو اس سے حکومت کے نیک ارادوں کا علم ہر ایک کو ہو جائے گا اور قانون کے خوف سے لوگ ایسی غیر انسانی حرکتیں نہیں کریں گے۔ اس بل میں زور دیا گیا ہے کہ 1976 ء کے تعزیرات بحرین کے آرٹیکل اور 2014 کے انفارمیشن ٹکنالوجی سے مربوط جرائم کی روک تھام کے لئے قانون سازوں سے خواہش کی گئی تھی کہ وہ اس پر دوبارہ غور کریں جس کے ذریعہ کسی بھی حادثہ کے مقام پر لوگوں کو حادثہ سے دوچار افراد یا گاڑیوں کی آڈیو یا ویڈیو بنانے کی اجازت نہیں ہوگی جو لوگ اکثر اپنے کیمرے، اسمارٹ فونس اور ٹیابلیٹس کے ذریعہ تیار کرتے ہیں۔ البتہ کوئی بااختیار میڈیا سے تعلق رکھنے والے فرد کو ایسا کرنے کی اجازت ہوگی۔ علاوہ ازیں حادثہ سے دوچار گاڑی کے ڈرائیور اور دیگر مسافرین جو زیادہ زخمی نہیں ہیں انہیں بھی ویڈیو سازی کی اجازت ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT