Tuesday , October 17 2017
Home / ہندوستان / حالیہ پالیسی اصلاحات سے ہندوستان کی ترقی کو فائدہ

حالیہ پالیسی اصلاحات سے ہندوستان کی ترقی کو فائدہ

ہندوستان کی شرح ترقی 2016 ء میں چین سے زیادہ ہونے کی توقع، آئی ایم ایف کی رپورٹ
واشنگٹن 12 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کی ترقی کو حالیہ پالیسی اصلاحات سے فائدہ پہونچے گا اور سرمایہ کاری کی رفتار تیز ہوجائے گی، اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی واقع ہوگی۔ بین الاقوامی مالیاتی فنڈ نے آج اُمید ظاہر کی کہ 2016 ء میں ہندوستان کی شرح ترقی 7.5 فیصد ہوجائے گی۔ جبکہ چین کی شرح ترقی 6.3 فیصد ہوگی۔ تاہم جاریہ سال 2015 ء میں بین الاقوامی مالیاتی فنڈ نے شرح ترقی کا اندازہ 7.3 فیصد لگایا ہے جو جولائی میں جاریہ سال کی شرح ترقی کے اُس کے اندازے سے 0.2 فیصد کم ہے۔ بین الاقوامی مالیاتی فنڈ نے آئندہ ہفتے ترکی میں مقرر G-20 چوٹی کانفرنس سے قبل اپنی رپورٹ جاری کی ہے۔ جس کے بموجب اُبھرتی ہوئی معیشتوں میں شرح ترقی میں 2015 ء کے دوران مسلسل پانچویں سال انحطاط پیدا ہوگا۔ آئندہ سال شرح ترقی کے مستحکم ہونے کا امکان ہے۔ چین کی شرح ترقی توقع ہے کہ کم ہوگی کیوں کہ جائیداد، قرضہ جات، سرمایہ کاری وغیرہ میں انحطاط جاری رہے گا۔ ہندوستان کی شرح ترقی کو اُس کی حالیہ پالیسی اصلاحات سے فائدہ پہونچے گا چنانچہ سرمایہ کاری میں اضافہ ہوگا، اشیائے ضروریہ کی قیمتیں کم ہوں گی۔ برازیل میں کمزور کاروبار اور صارفین کے اعتماد میں کمی کی وجہ سے مشکل سیاسی حالات پیدا ہوں گے اور بڑے پیمانے پر معاشی پالیسی کا موقف توقع ہے کہ اندرون ملک طلب کو کمزور کردے گا۔ سرمایہ کاری میں جو انحطاط پذیر ہے مزید تیز رفتار پیدا ہوگی۔ روس میں معاشی پریشانی تیل کی قیمتوں میں کمی اور بین الاقوامی تحدیدات کی عکاس ہیں جنھوں نے روس کے نظام کو کمزور کردیا ہے۔ اُبھرتی ہوئی معاشی ترقی 2016ء میں دوبارہ پیدا ہونے کی پیش قیاسی کی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT