Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / حامد انصاری نے راجیہ سبھا کو ’الوداع‘کہا

حامد انصاری نے راجیہ سبھا کو ’الوداع‘کہا

تنقید کے بغیر جمہوریت کا وجود فضول
ایک دہا طویل خدمت کا موقع
سبکدوش راجیہ سبھا صدرنشین کا خطاب

نئی دہلی، 10اگست (سیاست ڈاٹ کام) راجیہ سبھا کے چیئرمین حامد انصاری نے پرجوش اور شاعرانہ انداز میں آج ایوان کو الوداع کہتے ہوئے تعاون، احترام اور اعتماد کے لئے ایوان کے لیڈر، حزب اختلاف کے رہنما، تمام جماعتوں کے اہم رہنماؤں اور تمام ارکان کا شکریہ ادا کیا۔مسٹر انصاری نے ایوان میں دو گھنٹے تک الوداعی تقریروں کے بعد اپنے خطاب میں کہا، “آؤ چلیں کہ اب فسانہ ختم ہوتا ہے ، عاشقی بھی ختم ہوتی ……” انہوں نے اپنے دس سالہ مدت کار میں تعاون، احترام اور بھرپوراعتماد کے لئے ایوان کے رہنماؤں، اپوزیشن کے لیڈروں، جماعتوں کے رہنماؤں اور تمام ارکان کا شکریہ ادا کیا اور ان کے تئیں اظہار تشکربھی کیا۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت کا حسن اور تقدس اس کے احترام میں ہے۔ اگر حکومت کی پالیسیوں پر بلاجھجک تنقیدوں کی اجازت نہ دی جائے تو جمہوریت کا مفہوم ختم ہوجاتا ہے۔ نائب صدرجمہوریہ اور راجیہ سبھا کے صدرنشین کی حیثیت سے اپنی ایک دہا طویل خدمت کے بعد انہوں نے راجیہ سبھا کے جنرل سکریٹری شمشیر کے شریف اور دیگر عملے کا بھی شکریہ ادا کیا۔ چیئرمین نے اپنی تقریر کے آخر میں “جے ہند” کہا اور اپنے مقام پر کھڑے ہوکر دونوں ہاتھ جوڑ کرسب کوسلام کیا۔پورا ایوان ان کے اعزاز میں کھڑا ہو گیا۔ اس کے بعد مسٹر انصاری اپنے کمرے کی طرف جانے لگے تو ایوان کے زیادہ تر رکن ان کے ساتھ چلے گئے ۔

مسلسل دس سال تک ملک کے نائب صدر اور راجیہ سبھا کے چیئرمین رہنے والے مسٹر انصاری کی مدت آج ختم ہو رہی ہے ۔ اس موقع پر ارکان نے ان کی خدمات اور ایوان میں متعدد جدید پہل شروع کرنے کے لئے ان کا شکریہ ادا کیا۔ تمام ارکان نے مسٹر انصاری کے صحت مند اور بہتر زندگی کی تمنا کرتے ہوئے انہیں نیک خواہشات پیش کیں۔وزیر اعظم نریندر مودی، ایوان کے لیڈر ارون جیٹلی اور حزب اختلاف کے رہنما غلام نبی آزاد سمیت کئی ارکان نے ایک بہتر نوکر شاہ، سفارت کار، علیگڑھ مسلم یونیورسٹی کے وائس چانسلر اور پھر نائب صدر کے طور پر فرائض کی ادائیگی میں غیر جانبداری اور لگن کے لئے مسٹر انصاری کی تعریف کی۔الوداعی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ وہ دونوں ایوانوں اور ہم وطنوں کی طرف سے مسٹر انصاری کا شکریہ ادا کرتے ہیں اور ان کو نیک خواہشات پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی مسٹر انصاری مختلف کردار میں ملک کی خدمت کرنے سے حاصل تجربات سے آگے بھی ملک کی رہنمائی کرتے رہیں گے ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ایوان کے چیئرمین کے طور پر مسٹر انصاری نے اپنی ذمہ داریوں کو بخوبی نبھانے کی کوشش کی یہاں تک کہ اگر اس دوران کچھ موقعوں پر انہیں کچھ پریشانی محسوس ہوئی ہوگی لیکن اب انہیں اس سے نجات مل جائے گی۔ مسٹر مودی نے کہا کہ خود انہوں نے اپنے بیرون ملک دوروں کے تناظر میں مسٹر انصاری کے سفارتی تجربات کا فائدہ اٹھایا۔

TOPPOPULARRECENT