Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / حجاج کرام کو مسلمانوں کیلئے عملی نمونہ بن جانے علماء کی نصیحت

حجاج کرام کو مسلمانوں کیلئے عملی نمونہ بن جانے علماء کی نصیحت

ریاستی حج کمیٹی کی جانب سے حجاج کرام کیلئے موثر انتظامات کئے گئے : پروفیسر ایس اے شکور
حیدرآباد۔ 15 نومبر (پریس نوٹ) پروفیسر ایس اے شکور اسپیشل آفیسر تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی نے کہا ہے کہ ریاستی حج کمیٹی کی جانب سے نہ صرف ریاست تلنگانہ بلکہ ریاست آندھرا پردیش اور کرناٹک کے عازمین حج کی روانگی اور حج کے دوران ان کی مدد رہنمائی اور حج کی تکمیل کے بعد ان کی واپسی کے لئے بھی موثر انتظامات کئے گئے تھے جس کی وجہ سے حجاج کرام کو سفر حج میں بڑی سہولت حاصل ہوئی۔ وہ آج دوپہر عابڈز فنکشن ہال، تلک روڈ، عابڈز میں حجاج کرام کے تہنیتی جلسہ بعنوان ’’بعد واپسی حج کرام کی ذمہ داری‘‘ سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ حجاج کرام کو زمانہ قدیم سے ہی مسلم معاشرہ میں ہی نہیں بلکہ ہندوستانی سماج میں بے عزت و احترام کی نظروں سے دیکھا جاتا تھا اور ان کو سماج میں ایک خاص مقام حاصل تھا۔ ان کی زندگیاں مثالی ہوا کرتی تھیں۔ اس زمانہ میں حاجی صاحبان کی تعداد بھی کم ہوا کرتی تھی۔ آج کل حجاج کرام کی تعداد میں بے حد اضافہ ہوا ہے اور ہر سال ہزاروں افراد کو حج کی سعادت حاصل ہورہی ہے اور دیکھنے میں آیا ہے کہ اکثر حاجی صاحبان کی زندگیوں میں حج کے بعد بہت فرق آجاتا ہے اور علماء بیان کرتے ہیں کہ اگر کسی کی زندگی میں حج کے بعد اسلام کی تعلیمات کے مطابق زندگی گذارنے والی تبدیلی آجائے تو یہ ان کے حج قبول ہونے کی علامت ہے۔ انہوں نے کہا کہ حج کمیٹی ہر سال عازمین حج کی تربیت کیلئے بے شمار تربیتی اجتماعات شہر اور اضلاع میں منعقد کرتی ہے جس کی وجہ سے تلنگانہ کے حجاج کرام کو حج کے دوران بڑی سہولت ملا کرتی ہے۔ یہ سلسلہ ہر سال جاری رہتا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ، ڈپٹی چیف منسٹر مسٹر محمد محمود علی کو حج اُمور سے گہری دلچسپی ہے اور اسی وجہ سے حج کے انتظامات میں بہت سہولت ہوتی ہے۔ مولانا مفتی ابوبکر نے اسلامی نقطۂ نظر سے حج کے بعد حجام کرام کی ذمہ داریوں پر تفصیلی روشنی ڈالی۔ انہوں نے حجاج کرام کو مبارکباد دی کہ انہوں نے ایک بہت بڑا فریضہ ادا کرنے کی سعادت نصیب ہوئی ہے اور اللہ نے ان کو خاص اپنے دربار میں بلایا ہے تو اب ان کیلئے یہ ضروری ہے کہ وہ بھی اپنی زندگی اللہ اور رسولؐ کے احکام کے مطابق گذارنے کی کوشش کریں۔ اسی میں ان کی کامیابی ہے۔ انہوں نے حجاج کرام سے یہ خواہش کی کہ وہ دین کے تقاضوں کو پورا کریں۔ انہوں نے کہا کہ حج زندگی میں ایک مرتبہ فرض ہے، جبکہ نماز دن میں پانچ مرتبہ اور روزے ہر سال ایک مہینہ کے لئے فرض ہیں، اس لئے مسلمان ان فرائض کی تکمیل پر اصرار کریں۔ انہوں نے کہا کہ حجاج کرام اللہ کے حقوق کیساتھ ساتھ بندوں خصوصاً اپنے رشتہ داروں اور پڑوسیوں کے حقوق ادا کرتے رہیں اور اس معاملے میں ہرگز کوتاہی نہ کریں۔ نمازوں کی ادائیگی کے وقت یہ تصور کریں کہ کعبہ ان کے سامنے ہے۔ اجتماع کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ اس اجتماع میں مرد و خواتین کی کثیر تعداد شریک تھی۔ شاہ مفتی نوال الرحمن امیر شریعہ شکاگو نے بھی مخاطب کیا۔ جناب عرفان شریف نے کارروائی چلائی اور مہمانوں کا استقبال خادم مزمل جنیدی مسجد عامرہ نے کیا۔

TOPPOPULARRECENT